شام میں اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں ایران نواز جنگجوؤں سمیت 8 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے کہا ہے کہ میزائل حملوں کے جواب میں اس نے گذشتہ شب شام میں اسد رجیم کے فوجی ڈھانچے کو نشانہ بنایا ہے۔

فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ "گذشتہ رات شام سے جنوبی گولان کی پہاڑیوں کی سمت میں متعدد میزائل داغے گئے تھے۔ اس کے جواب میں اسرائیلی فوج کے لڑاکا طیاروں نے رات کے وقت درعا کے علاقے میں شامی حکومت سے تعلق رکھنے والے فوجی ڈھانچے پر بمباری کی"۔

فوج نے بمباری کے نتیجے میں کسی جانی یا مالی نقصان کا ذکر نہیں کیا۔ اسرائیل شاذ و نادر ہی شام کو نشانہ بنانے والے حملوں پر تبصرہ کرتا ہے لیکن اس نے بارہا کہا ہے کہ وہ صدر بشار الاسد کی حکومت کی حمایت کرنے والے ایران کو شام میں اپنے پاؤں جمانے کی اجازت نہیں دے گا۔

اسرائیل نے 2011ء میں شام کی خانہ جنگی کے آغاز کے بعد سے اپنے شمالی پڑوسی پر سیکڑوں فضائی حملے کیے ہیں۔ اسرائیلی فوج نے لبنانی حزب اللہ کے ساتھ ساتھ شامی فوج کے ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ گذشتہ برس سات اکتوبر کو حماس کے اسرائیل پر حیران کن حملے کے بعد شام اور لبنان میں اسرائیلی بمباری کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس نے کہا ہے کہ اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں شام میں آٹھ افراد ہلاک ہوئے ہیں جن میں ایران کے وفادار جنگجو بھی شامل ہیں۔

اسرائیلی فوج نے بدھ کے روز کہا کہ اس نے توپ خانے سے جنوبی لبنان میں کئی مقامات پر گولہ باری کی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں