ہم آہنگی پر مشتمل سعودی، کویتی مشترکہ اعلامیہ جاری

’بحیرہ احمر کو محفوظ تجارتی گزرگاہ کے طور پر برقرار رکھنے کا مطالبہ کیا ہے‘

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امیر کویت شیخ مشعل الاحمد الجابر الصباح کے دورہ سعودی عرب کے اختتام پر سعودی، کویتی مشترکہ اعلامیہ جاری کیا گیا ہے۔

مشترکہ اعلامیہ میں دونوں ملکوں نے باہمی تعاون کے فروغ اور یکساں پالیسیوں پر زور دیا ہے۔

مشترکہ اعلامیہ میں دونوں ملکوں نے سعودی، کویتی کونسل کے اجلاس پرزور دیا ہے جو رواں سال کے دوران کویت میں منعقد ہو گا۔

دونوں ملکوں نے غیر ملکی سرمایہ کاروں کو سہولت فراہم کرنے پر اتفاق کیا ہے ۔

توانائی کے شعبے میں تعاون کو فروغ دینے کے علاوہ اوپک پلس کی کامیاب کاوشوں پر اطمینان کا اظہار کیا ہے۔

مشترکہ اعلامیہ میں صنعتی شعبے میں ہم آہنگی اور دفاعی شعبے میں تعاون کے فروغ پر اتفاق کیا ہے۔

دونوں ملکوں نے عراق پر کویت کی خود مختاری کو تسلیم کرنے اور دونوں ملکوں کے درمیان بحری علامت 162 کی حد بندی کو برقرار رکھنے کا مطالبہ کیا ہے۔

سعودی عرب اور کویت نے الدرہ تیل کنواں کے متعلق فیصلہ کیا ہے کہ یہ پورا کنواں کویت کے بحری حدود میں آتا ہے اور اس کے علاوہ مشترکہ حدود میں جتنے بھی کنویں ہیں وہ سعودی عرب اور کویت کی مشترکہ ملکیت ہیں اور انہی دونوں کو ان سے فائدہ اٹھانے کا اختیار ہے۔

فلسطین کے معاملے پر دونوں ملکوں نے اپنی پریشانی اور قلق کا مظاہرہ کرتے ہوئے اسرائیل کے وحشیانہ اقدام کی مذمت کرتے ہوئے جنگ بندی کا پر زور مطالبہ کیا ہے۔

یمن کے حوالے سے دنوں ملکوں نے یکساں پالیسی اختیار کرتے ہوئے بحران کے سیاسی حل پر زور دیتے ہوئے بحیرہ احمر کو محفوظ تجارتی گزرگاہ کے طور پر برقرار رکھنے کا مطالبہ کیا ہے۔

سوڈان کی وحدت اور سالمیت کو تسلیم کرتے ہوئے بیرونی مداخلت کو مسترد کیا اور دونوں متنازعہ قوتوں کو باہم اصلاح سے جنگ بندی پر راغب کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں