سعودی فوجی نے ریٹائرمنٹ کے بعد کار مکینک کے پیشے کو اپنا شوق بنا لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے علاقے جازان میں ابو عریش گورنری سے تعلق رکھنے والے ایک سعودی شہری نے فوج میں تیس سال کی ملازمت سے ریٹائر ہونے کے بعد اپنے فارغ وقت گاڑیوں کی مرمت اور دیکھ بھال کے اپنے شوق کو عملی جامہ پہنانا شروع کردیا ہے۔

علی الشہری نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو بتایا کہ وہ رائل سعودی لینڈ فورسز مینٹیننس کور ڈپارٹمنٹ کی قیادت میں ملازمت کرتے تھے جہاں انہوں نے 30 سال فوج میں خدمات انجام دیں۔ ملازمت سے ریٹائرمنٹ بعد انہوں نے گاڑیوں کی مرمت اور دیکھ بھال کا کام شروع کردیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ایسے لوگ بھی ہیں جو ریٹائرمنٹ کے بعد کے مرحلے سے ڈرتے ہیں۔ چونکہ میں ان لوگوں میں سے ہوں جو نقل و حرکت اور ہاتھ سے مشقت کو پسند کرتے ہیں اور گھر بیٹھنے کے لیے ہتھیار نہیں ڈالتے۔ میں نے ریٹائرمنٹ کے چھ ماہ بعد اپنے شوق پر عمل کرنے کا فیصلہ کیا جو مجھے پسند ہے۔ میرا پیشہ گاڑیوں کی مرمت کرنا ہے۔ میں اپنے فارغ وقت کو گزارنے کے لیے اسی پیشے کو اپنایا۔

ریٹائرمنٹ کے بعد
ریٹائرمنٹ کے بعد

انہوں نے نشاندہی کی کہ ان کے پاس کئی سالوں کا تجربہ اور مطالعہ ہے کہ انہوں نے سعودی عرب کے اندر اور باہر مکینکس کی خصوصیت کا مطالعہ کیا۔ ان کی ریٹائرمنٹ کے بعد کسی نے انہیں مشورہ دیا کہ وہ جس چیز سے محبت کرتے ہیں اور جس کے بارے میں پرجوش ہیں اس میں سرمایہ کاری کریں۔اس سے انہیں حوصلہ ملا۔ چنانچہ گاڑیوں کی دیکھ بھال اور مرمت کے لیے ایک ورکشاپ کھولی۔

انہوں نے کہا کہ "میں نے کہاوت سن رکھی تھی کہ زندگی گنتے کے دنوں کا نام ہے۔ یہ کہاوت سچ ہے اور یہ وہی ہے جو اس وقت میرے ساتھ اس ورکشاپ میں کام کے دوران ہو رہا ہے جس میں میں اس وقت کام کر رہا ہوں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں