موٹرسائیکل پر دیدارحرم کا شوق، اردنی مسلمان کا موٹرسائیکل پرتین ہزار کلومیٹرسفر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

ہر سال لاکھوں مسلمان حج اور عمرہ کی سعادت حاصل کرنے لیے پوری دنیا سے حجاز مقدس کا رخ کرتے ہیں۔ کئی مسلمان اس مقدس سفر کو یادگار بنانے کے لیے غیر روایتی طریقے سے بھی آتے ہیں۔

اردن کےعمر زحیمات ایسے ہی مسلمان ہیں جو عمرہ کی سعادت کےحصول کے لیے موٹرسائیکل پر دونوں طرف تین ہزار کلو میٹر کا سفر طے کرکے مکہ معظمہ وہاں سے اردن پہنچے ہیں۔

’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ سے بات کرتے ہوئے عمر زحیمات نے اپنےاس منفرد سفر کی روداد بیان کی۔ انہوں نے کسی غلطی سے بچنے کے لیے احتیاط سے منصوبہ بندی کی تھی۔ انھوں نے یہ خیال طفیلہ گورنری میں موٹرسائیکل سواروں کے ایک گروپ اور اردن میں موٹرسائیکل چلانےوالوں کے سامنے پیش کیا، لیکن ان کی طرف سے اسے کوئی جواب نہیں ملا۔

الزحیمات اردن کے ایک سرکاری محکمے میں ملازم ہیں اور پانچ بچوں پر مشتمل ایک خاندان کے سربراہ ہیں۔ انہوں نے2018ء میں موٹرسائیکل خرید کر اور اردن کے تمام گورنریوں کا دورہ کرنے کےبعد ایک نیا فیصلہ کیا۔ اس کے تحت اس نے موٹرسائیکل پر عمرہ کا سفر کرنے کا فیصلہ کیا۔

زحیمات طفیلہ گورنری سے ہوتے ہوئےالدرہ کراسنگ سے سعودی عرب کے علاقے ضبا اور وہاں سے مویلح کا سفر کیا۔ مویلح سے آگے انہوں نے میقات کے مقام سے احرام باندھا جہاں سے وہ عمرہ کی سعادت حاصل کرنے کے لیے مکہ معظمہ کے لیے روانہ ہوئے۔

سفر کی مشکلات

سفر کی مشکلات کے بارے میں الزحیمات نے کہا کہ خدا کا شکر ہے کہ چیزیں بہت آسان تھیں، لیکن گرم موسم اور تیز ہوا میں احرام کے لباس میں موٹر سائیکل چلانا سب سے بڑا مسئلہ تھا، لیکن حالات ٹھیک چل رہے تھے۔

انہوں نے بتایا کہ 1,500 کلومیٹر کا فاصلہ ایک طرف طے کیا اور اتنا ہی فاصلہ واپس کیا۔ پورے سفر کے دوران 152 لیٹر کے حجم کے ساتھ ایندھن بھرنے کے لیے 10 اسٹیشنوں سے پٹرول ڈلوایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں