یمن کے خلاف حملوں میں شامل نہ ہوورنہ نشانہ بنایا جائے گا:حوثی عہدیدارکا اٹلی کوانتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یمن کے ایران سے منسلک حوثی باغیوں کے ایک اعلیٰ عہدیدار نے پیر کو شائع ہونے والے ایک انٹرویو میں کہا کہ اگر اٹلی یمن کے خلاف حملوں میں حصہ لیتا ہے تو اسے نشانہ بنایا جائے گا۔

حوثیوں کی سپریم انقلابی کمیٹی کے سربراہ محمد علی الحوثی نے روزنامہ لا ریپبلیکا کو بتایا کہ اٹلی کو اسرائیل-فلسطین تنازع میں غیر جانبدار رہنا چاہیے اور غزہ پر حملے بند کرنے کے لیے اسرائیل پر دباؤ ڈالنا چاہیے اور مزید کہا، علاقے میں امن کے حصول کا یہی واحد راستہ ہے۔

اٹلی نے جمعہ کے روز کہا تھا کہ وہ یوروپی یونین کے بحیرۂ احمر کے بحری مشن کی کمانڈ ان ایڈمرل فراہم کرے گا جس میں وہ یمن کی حوثی ملیشیا کے حملوں سے بحری جہازوں کی حفاظت کے لئے شامل ہوا ہے۔

یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کے سربراہ جوزپ بوریل نے کہا ہے کہ فروری کے وسط میں شروع ہونے والے اس مشن کا مینڈیٹ تجارتی بحری جہازوں کی حفاظت اور حملوں کو روکنے کے لیے ہو گا لیکن حوثیوں کے خلاف حملوں میں حصہ نہیں لے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں