دائیں بازو کے اسرائیلی وزراء کا انتہاپسند آبادکاروں پر امریکی پابندیوں پر اعتراض

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

امریکہ کی طرف سے پہلی بار اسرائیلیوں کی طرف سے مغربی کنارے میں فلسطینیوں پر تشدد کا نوٹس لیتے ہوئے چار آباد کاروں پر پابندی لگانے سے اسرائیل میں ایک نئی بحث چھڑگئی ہے۔

اسرائیل کے مرکزی بنک نے چار یہودی آباد کاروں تشدد پسند قرار دیتے ہوئے پابندیوں تسلیم کر لیا ہو کہا ہے بصورت دیگر منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کے ذمرے میں آنے کا خطرہ ہو گا مزید بین الاقوامی اداروں کے ساتھ ڈیل نہیں کیا جا سکے گا۔

تاہم امریکی وزیر خارجہ بلنکن کا مشرق وسطیٰ کا دورہ شروع ہونے کے ساتھ ہی سخت لہجے میں وزیر خزانہ بزالیل سموٹریچ اور اسرائیلی سلامتی کے وزیر ایتمار بین گویر امریکی اقدام کو اسرائیل کو دنیا کی دوسری کئی مملکتوں کی 'بنانا سٹیٹ' بنانے کی بات کی ہے۔

ایتمار نے یہاں تک کہہ دیا ہے کہ امریکہ اسرائیل پرخود حکومت کی کوشش کر رہا ہے۔

دوسری جانب یہ بھی ہوا ہے کہ اسرائیل کے دو بڑے بنکوں نے بھی اس فیصلے کو ماننے کا راستہ لیا ہے ایک 'لیومی بنک' نے تو پابندیوں کی زد میں آئے ایک یہودی ینون لیوی نامی تشدد پسند آباد کار کو امریکی حکم کے بعد اسی کے اکاؤنٹ سے رقم کی ٹرانزیکشن سے انکار کیا ہے تاہم اس موضوع پر میڈیا سے بات نہیں کرنا چاہی۔

ایک دوسرے بڑے 'بنک ہاپولیم 'نے کسی خاص معاملے یا اکاؤنٹ ہولڈر کے بارے میں براہ راست تو کئی بات نہیں کی ہے البتہ یہ ضرور کہا ہے کہ وہ بین الاقوامی پابندیاں تسلیم کرتا ہے اور کسی بھی قانونی حکم کی تعمیل کرے گا۔

ایک اور اسرائیلی 'پوسٹل بنک' نے ڈیوڈ چائی چسدانی نام کے متشدد یہودی آباد کار کے اکاؤنٹس کو منجمد کر چکا ہے۔ پوسٹل بنک نے بھی امریکی فیصلے کو بین الاقوامی فیصلہ کہہ کر تسلیم کیا ہے۔

اگرچہ اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو نے امریکی پابندیوں کو شروع میں ہی تنقید کا نشانہ بنایا تھا لیکن ان کے اتحادی انتہا پسند وزیر اس معاملے پر ایک باضابطہ موقف اختیار کر چکے ہیں۔ وزیر خزانہ جن کی وزارت سے جڑے بنک تو تسلیم کر رہے مگر ان کا کہنا ہے "ہم امریکہ کی 'بنانا سٹیٹس' میں شامل نہیں ہیں۔ اس لیے ہم امریکہ کو اجازت نہیں دیں گے کہ ہمارے شہریوں کو نقصان پہنچائے۔"

وزیر خزانہ نے اتوار کے روز رپورٹرز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا' یہ الزامات جو یہودی آباد کاروں پر لگائے ہیں یہ مکمل مشکوک ہیں، ہم ہر ممکن طریقے سے اسرائیلی بنکوں کو ان پابندیوں پر عمل درآمد سے روکیں گے۔'

ایتمار بین گویر یہودی آباد کاروں کے ساتھ غیر معمولی حمایت کے تعلق میں منسلک ہیں۔ وہ خود بھی یہودی یآباد کاروں میں شامل ہیں۔

بین گویر کا کہنا ہے 'ہم اپنے اتحادیوں کا احترام کرتے ہیں مگر یہ نہیں ہو سکتا کی وہ ہماری ریاست کی حکمرانی اور فیصلے کرنے لگیں۔ ہمارے شہریوں کے اکاؤنٹس منجمد کرنا ہماری سرخ لکیر ہو گی۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں