" رماح النصر2024" مشقیں جنگی حکمت عملی کے نکھارکا ذریعہ ثابت ہوں گی

سعودی عرب میں جاری نو ممالک کی افواج چار سے اٹھارہ فروری تک مشقیں جاری رکھیں گی۔

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب میں اتوار کے روز سے نو ممالک کی افواج پر مشتمل’رماح النصر 2024‘ مشقیں جاری ہیں۔ یہ مشقیں سعودی عرب کے مشرقی سیکٹر میں ایئر وارفیئر سینٹر میں ہو رہی ہیں۔

اس تناظرمیں مشقوں کے کمانڈر میجر جنرل پائلٹ اسٹاف خالد الحربی نے کہا کہ یہ مشقیں حصہ لینے والی افواج کی حکمت عملی پر عمل درآمد کی مہارت کو نکھارنے کا ذریعہ بنیں گی۔ اس کے علاوہ یہ مشقیں شرکاء کے درمیان مطلوبہ ہم آہنگی کے اعلیٰ درجے کے حصول ، پیشہ ورانہ مہارت میں اضافے، کئے گئے کاموں کا جائزہ لینے اور دیگر افواج کے ساتھ کام اور رابطہ کاری کے اہداف کےحصول میں مدد گار ہوں گی۔

الحربی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ سعودی حکومت کے مشقوں کے فریم ورک کے اندر اس سال پہلی بار تین برادر اور حقیقی دوست ممالک شامل ہوئے تھے۔

جدید ترین سائبر وار سسٹم

انہوں نے مزید کہا کہ "میں تمام شرکاء کی طرف سے مشقوں کے اہداف کے حصول میں پیشہ ورانہ مہارت کے بارے میں افواج کی حقیقی صلاحیت دیکھتا ہوں۔

انہوں نے اس بات کی بھی نشاندہی کی کہ اس سال کے ایڈیشن میں مشقوں میں جدید فضائی برقی جنگی نظام کے تجربات شامل ہیں۔ نیز جنگی مفروضے تیار کرنے کے فریم ورک، حصہ لینے والی افواج کو مشقوں کے منظرناموں کے دوران اپنی دفاعی صلاحیتوں کو دوگنا کرنے اور ابھرتے ہوئے خطرات سے ہم آہنگ رہنے کا موقع فراہم کریں گی۔

قابل ذکر ہے کہ سعودی فوجی دستے اور 9 ممالک کی افواج اسی ماہ کی 4 سے 18 فروری تک مشرقی سیکٹر کے ایئر وار سنٹر میں منعقد ہونے والی "Lances of Victory 2024" مشق میں حصہ لے رہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں