اسرائیلی فوج لبنان کے ساتھ سرحد پر لڑائی کے لیے تیار ہے: فوجی کمانڈر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج میں شمالی ملٹری ریجن کے کمانڈر جنرل اوری گورڈین نے اعلان کیا ہے کہ فوج جنگی کارروائیوں کو وسعت دینے اور ملک کے شمال میں لبنان کے ساتھ سرحدی علاقے میں حملے کے لیے تیاریاں جاری رکھے ہوئے ہے۔

اسرائیلی فوج کے میڈیا آفس نے گورڈین کے حوالے سے بتایا کہ "ہمارا مقصد شمال میں سکیورٹی کے میدان میں اس طرح کی صورت حال کو تبدیل کرنا ہے جس سے ہم آبادی کی ان کے گھروں کی محفوظ واپسی کو یقینی بنایا جا سکے۔

انہوں نے کہا کہ "ہم سب تبدیلی کے لیے پرعزم ہیں۔ سلامتی کے میدان میں حقیقت پسندی اور جنگ کی توسیع (شمال میں) اور حملے کی منتقلی کے لیے تیاری جاری رکھے ہوئے ہیں۔ یہ ہمارا مشن ہے۔" انہوں نے مزید کہا کہ "ہم دفاعی کارروائیاں جاری رکھیں گے اور حزب اللہ پر حملہ کریں گے"۔

اسرائیل کی شمالی سرحد پر اب بھی کشیدگی برقرار ہے، جہاں لبنانی سرزمین سے باقاعدگی سے بمباری ہوتی رہتی ہے۔ اس کا جواب اسرائیلی فوج فائرنگ کرکے اور حزب اللہ کے ٹھکانوں کو نشانہ بناتے ہوئے لبنان کے سرحدی علاقوں کو نشانہ بنا کر دیتی ہے۔ اس کشیدگی کی وجہ سے شمالی اسرائیل کے تقریبا 80 ہزار سے زائد لوگ بے گھر ہوگئے ہیں۔

اسی تناظر میں جنوبی لبنان کے دیہاتوں اور قصبوں پر اسرائیلی بمباری کا سلسلہ جاری ہے۔ دوسری جانب حزب اللہ نے کل جمعہ کو ایک بیان میں اعلان کیا کہ اس نے ڈویوی بیرک کو نشانہ بنایا۔

اسرائیلی فوج نےاعلان کیا کہ جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب لبنان سے شمالی اسرائیل کی طرف تقریباً 30 میزائل داغے گئے۔ اس سے چند گھنٹے قبل حزب اللہ کے ایک کمانڈر اسرائیلی فضائی حملے میں مارے گئے تھے۔

اسرائیلی فوج کے ایک ترجمان نے کہا کہ عین زیتیم اور دیلتون کے علاقوں پر اس بمباری کے نتیجے میں "کوئی انسانی جانی نقصان نہیں ہوا"۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں