فلسطین اسرائیل تنازع

غزہ میں چھ سالہ فلسطینی بچی اسرائیلی فوج کے ہاتھوں شہید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ کے فلسطینی خاندان کی ایک بچی اس وقت لاپتہ ہوگئی جب وہ اپنے خاندان کے ساتھ کار میں سوار تھی اور کار کو اسرائیلی فوج نے نشانہ بنایا ۔ ہفتہ کے روز وزارت صحت غزہ نے بتایا ہے کہ اس چھ سالہ بچی کی لاش مل گئی ہے۔ بچی کے خاندان نے بچی کے قتل کا ذمہ دار اسرائیلی فوج کو قرار دیا ہے۔

دو ہفتے پہلے ہند رجب نام کی یہ چھ سالہ بچی اس وقت لاپتہ ہوگئی تھی جب اس کے گھر والوں کو اسرائیلی فوج نے فائرنگ کر کے ہلاک کر دیا تھا اور وہ اپنے اردگرد لاشیں پڑی دیکھ رہی تھی۔ چھ سالہ بچی کے ساتھ اس کے گھر والے غزہ میں اسرائیلی بمباری کی وجہ سے غزہ کو چھوڑ کر جا رہے تھے کہ یہ واقعہ پیش آیا اور اسرائیلی فوج نے گاڑی پر فائرنگ کر کے بچی کے گھر والوں کو قتل کر دیا۔ جبکہ بچی کو لاپتہ کر دیا گیا۔

بچی کے دادا باہا حمادہ نے 'ای ایف پی' کو بتایا ہے کہ بچی سمیت خاندان کے دوسرے لوگوں کو اسرائیلی فوج نے قتل کر دیا ہے۔

خاندان کے بعض دیگر افراد بعد ازاں ایک پیٹرول سٹیشن کے قریب پہنچے تو وہاں تباہ شدہ گاڑی موجود تھی۔ بچی کے دادا نے کہا خاندان کے لوگ ہفتہ کے روز اس علاقے میں پہنچے جہاں تباہ شدہ گاڑی موجود تھی کہ ہفتہ کے روز ہی اسرائیلی فوج اس علاقے سے پیچھے ہٹی ہے۔

غزہ میں وزارت صحت نے بھی بچی کی شہادت کی تصدیق کی ہے۔ وزارت صحت نے بچی کے خاندان کے حوالے سے کہا ہے کہ اس چھ سالہ رجب کو بھی اسرائیلی فوج نے قتل کیا ہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے 'اے ایف پی' نے چھ سالہ فلسطینی بچی کے قتل کے حوالے سے اسرائیلی فوج کے ترجمان سے رابطہ کیا تو فوجی ترجمان نے تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں