اسرائیل کی غزہ پر بمباری، اپنے ہی 2 یرغمالی ہلاک اور 8 زخمی کر دیے : القسام بریگیڈ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

پچھلے چار دنوں کے دوران اسرائیل نے غزہ پر اندھا دھند بمباری کے مختلف واقعات میں کم از کم 2 اسرائیلی یرغمالیوں کو ہلاک اور 8 کو زخمی کردیا۔ اس امر کا انکشاف حماس کے عسکری ونگ القسام بریگیڈ نے اتوار کے روز اپنے ٹیلی گرام چینل کے ذریعے کیا ہے۔

القسام بریگیڈ کے بیان کے مطابق ان یرغمالیوں کی ہلاکتوں اور زخمی ہونے کی ذمہ داری براہ راست اسرائیلی فوج پر عائد ہوتی ہے۔ کیونکہ زخمی یرغمالیوں کی حالت مزید خراب ہو رہی ہے کہ ان کے لیے غزہ میں علاج معالجے کی سہولت باقی نہیں رہی ہے۔

یرغمالیوں کی تازہ ہلاکتوں اور زخمی ہونے کے واقعات کی ذمہ داری براہ راست اندھا دھند اور مسلسل جاری رہنے والی اسرائیلی بمباری پر ہے۔ القسام بریگیڈ کے مطابق اپنے ہی یرغمالیوں کو بھی اندھا دھند بمباری کر کے اسرائیلی فوج بتدریج نقصان پہنچا رہی ہے۔

واضح رہے اب تک غزہ کی پٹی پر متعدد اسرائیلی یرغمالیوں کی ہلاکتوں کے علاوہ اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں 28 ہزار سے زائد فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں۔ جبکہ اسرائیلی فوج کی بمباری کی وجہ سے اب تک لگ بھگ 23 لاکھ فلسطینی بےگھر ہو کر نقل مکانی پر مجبور ہیں۔

ماہ نومبر میں وقفے وقفے سے تقریباً ایک ہفتے کے لیے ہونے والی جنگ بندی کے نتیجے میں حماس نے غزہ میں قید کیے گئے ایک سو یرغمالیوں کو رہائی دے دی تھی۔ جس کے بدلے میں اسرائیلی فوج نے 240 فلسطینی قیدیوں کو رہا کیا تھا۔

اسرائیلی فوج کے ترجمان ریئر ایڈمرل ڈینیل ہگالی نے منگل کے روز کہا تھا کہ 'غزہ میں باقی رہ جانے والے اسرائیلی یرغمالیوں میں سے 31 ہلاک ہو چکے ہیں۔ اس لیے اب ہم انہیں مردہ ہی تصور کرتے ہیں اور ہم نے ان کی فیملیز کو بھی اس بارے میں آگاہ کر دیا ہے۔'

تاہم بتایا جاتا ہے کہ اب بھی اسرائیل کے 136 یرغمالی حماس کے پاس قید میں ہیں لیکن ان کا مستقبل کیا ہے اور ان کی رہائی کیسے کب ممکن ہو سکتی ہے، اس بارے میں فی الحال کچھ نہیں کہا جا سکتا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں