امریکی اتحادی افواج نے شام میں تیل کے ذخائر پر کیے گئے ڈرون حملے روک دیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

مشرقی شام میں موجود امریکی و اتحادی افواج نے چھ ڈرون حملوں کو کامیابی سے روک دیا ہے۔ ان ڈرون حملوں کا ہدف کونوکو آئل فیلڈ کے ساتھ جڑا فوجی اڈہ تھا۔ یہ بات سکیورٹی سے متعلق ذرائع نے بتائی ہے کہ ہفتے کے روز چھ ڈرون حملے کیے تھے۔

تاہم ذرائع نے ان ڈرون حملوں کے نتیجے میں کسی جانی نقصان کی تصدیق نہیں کی ہے۔ اتحادی افواج اور شامی جمہوری افواج نے مل کر داعش کی باقیات کو نشانہ بنایا ہے۔

واضح رہے سات اکتوبر کے بعد سے ایرانی حمایت یافتہ عسکری گروپوں کی طرف سے شام اور عراق میں بڑھے ہوئے حملوں کا سامنا ہے۔ شام میں اپوزیشن کی حمایت یافتہ شامی جمہوری فوج کے جنرل مظلوم عابدی نے 'رائٹرز' سے بات کرتے ہوئے کہا' پچھلے ہفتے امریکہ کو چاہیے تھا کہ وہ اضافی فضائی دفاعی سسٹم فراہم کرتا کہ ہم اپنے اڈے محفوظ بنا سکتے۔'

جنرل مظلوم عابدی کا یہ بیان اس واقعے کے بعد سامنے آیا ہے جب ایک ڈرون حملے سے ' ایس ڈی ایف' کے چھ اہلکار ہلاک ہوگئے ہیں۔ اسی طرح چند روز قبل ایک اور ڈرون حملہ کر کے ایرانی حمایت یافتہ عسکری گروپ نے اردن میں تین امریکی فوجی ہلاک اور متعدد فوجی زخمی کر دیے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں