سعودی آرٹسٹ نے پتھروں کوآرٹ کے فن پاروں میں بدل دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کی ایک آرٹسٹ نے اپنے شہر النماص میں پتھروں پر نقش و نگاربنانے کے آئیڈیئے کو عمل شکل دے کر پتھر کے ٹکروں کو فن پاروں میں تبدیل کردیا۔

گول اور چپٹی شکلوں کے پتھروں پر کو فن پاروں تبدیل کرنے کے ہنر کی وجہ سے سمیہ الشہری کو توجہ حاصل ہوئی۔ وہ ان پتھروں پرڈرائنگ کے تجربے میں مشغول ہونا پسند کرتی ہیں تاکہ آرٹ کے منفرد اور حیرت انگیز نمونے سامنے آئیں۔

سعودی بصری آرٹسٹ سمیہ الشہری نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ سے اپنے فنی خیال کی کہانی کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ پتھروں پر پہلی تصویر تقریباً تجریدی اور تھی۔ مجھے خاندان اور دوستوں کی طرف سے حوصلہ افزائی اورر ترغیب ملی۔ اس سے ایک ایسا فلسفہ تشکیل دیا جو انسانی خصوصیات کا اظہار کرتا ہے اور اس کی خصوصیات کو تبدیل کرتا ہے۔ اپنے فن کارانہ خیال کو پتھروں پر خاکوں کی شکل میں ڈھالنا شروع کیا۔

اس نے کہا کہ پتھروں پر ایکریلک رنگوں کے ساتھ تجربہ کرنے کے بعد میں نے نتیجہ اخذ کیا کہ روغن کے رنگوں کی اقسام ہیں جو پتھروں پر ایک مخصوص رنگ کی شدت کے ساتھ نمودار ہوتی ہیں۔ میں موجود تفصیلات اور احساسات کو خاکوں میں کھینچنے سے لطف اندوز ہونے لگی۔ یہ ایک ایسا آرٹ ہے کہ اس سے پتھر بولتے ہیں۔

پتھر پر انسانی خصوصیات
پتھر پر انسانی خصوصیات

پتھر پر ڈرائنگ

آرٹسٹ الشہری نے مزید کہا کہ پتھر پرخاکہ نگاری قدیم تاریخ میں بھی پائی جاتی ہے۔ مورخین اور فنکاروں نے اپنے کاموں اور فنکارانہ تخلیقات کو دستاویزی شکل دینے کے لیے پتھروں کا استعمال کیا۔ پتھروں پر سجاوٹ یا آرٹ ایک مربوط کام فنکارانہ کام ہے۔ مجھے امید ہے کہ میں اس فن کی علمبردار بنوں گی اور میں سعودی عرب کے ورثے، تہذیب اور ثقافتی تنوع کا اظہار کرنے کے لیے بین الاقوامی نمائشوں میں مملکت کی نمائندگی کروں گی۔

مقبول خبریں اہم خبریں