طویق آرٹ " نے سعودی پتھر کی خوبصورتی کو کیسے نکھارا؟

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

گریٹر ریاض پروجیکٹس کے تحت "ریاض آرٹ" کے زیراہتمام اتوار کے روز "طویق مجسمہ" نمائش 2024ء کے پانچویں ایڈیشن کا آغاز ہوا۔ یہ نمائش 12-24 فروری تک جاری رہے گی جس میں دنیا بھر سے 20 ممالک کے 30 آرٹسٹ شرکت کریں گے۔

اس نمائش میں سعودی پتھروں کے "گرینائٹ" کے 30 مجسموں کی نمائش کی گئی ہے۔ اس کے علاوہ نمائش میں متعدد مکالمے کے سیشن ، ورکشاپس اور تعلیمی ٹور شامل ہیں جس کا مقصد اس نمائش کو ایک تکنیکی پلیٹ فارم بنانا ہے تاکہ ریاض کے باشندوں اور زائرین کو علمی اور ثقافتی تبادلے کا موقع فراہم کیا جا سکے۔

"ریاض آرٹ" پروگرام کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر انجینیر خالد االھزانی نے وضاحت کی کہ 10 سعودیوں سمیت شریک آرٹسٹوں نے 23 دن کے دوران فورم میں اپنے کام کا اختتام کیا جہاں انہوں نے "گرینائٹ" پتھروں کو حیرت انگیز فن پاروں میں تبدیل کردیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ پانچویں ایڈیشن نے ایک ثقافتی مرکب تشکیل دیا جس کے نتیجے میں تخلیقی کاموں کو پیش کیا گیا۔ اس کا مقصد فنکاروں کو ایک جگہ جمع کرنا ، آرٹ کی تحریک کو تقویت دینا، دنیا بھر کے فنون کے ماہرین اور تخلیق کاروں کے لیے ایک منزل بننا ہے۔

"طویق مجسمہ سازی" ایک انوکھا پلیٹ فارم ہے جس میں دنیا بھرکے فنون کے ماہرین کا ایک گروپ شامل ہے ، جس کا مقصد آرٹ ورک انڈسٹری میں تعاون کرنا ہے جو دارالحکومت ریاض کے فن اور ثقافتی منظرکو تقویت بخشنے میں معاون ثابت ہو ، کیونکہ یہ مقامی اور بین الاقوامی صلاحیتوں کو قبول کرتا ، تیار کرتا اور مملکت میں تخلیقی معیشت کو بڑھاتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں