یورپی یونین غزہ میں اسرائیل کی انسانی حقوق کی پاسداری کا فوری جائزہ لے:آئرلینڈ، اسپین

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسپین اور آئرلینڈ کے وزرائے اعظم نے بدھ کے روز یورپی کمیشن سے کہا کہ وہ فوری طور پر اس بات کا جائزہ لے کہ آیا اسرائیل غزہ میں انسانی حقوق کی ذمہ داریوں کی تعمیل کر رہا ہے۔

سات اکتوبر کو جنوبی اسرائیل پر حماس کے حملے کے بعد اسرائیل نے جو جوابی کارروائی کی ہے، اس میں اب تک غزہ کی وزارتِ صحت کے مطابق کم از کم 28,576 فلسطینی جاں بحق ہو چکے ہیں۔

غزہ میں اپنی آخری پناہ گاہ میں پھنس جانے والے فلسطینیوں نے بدھ کے روز بڑھتے ہوئے خوف کا اظہار کیا کہ قاہرہ میں جنگ بندی کے مذاکرات بے نتیجہ ختم ہونے کے بعد اسرائیل جلد ہی جنوبی شہر رفح پر منصوبہ بند حملہ کرے گا۔

ہسپانوی حکومت کی ویب سائٹ پر شائع ہونے والے ایک مشترکہ خط میں دونوں وزرائے اعظم نے کہا، "ہمیں اسرائیل اور غزہ کی بگڑتی ہوئی صورتِ حال پر گہری تشویش ہے ... رفح کے علاقے میں توسیع شدہ اسرائیلی فوجی آپریشن ایک سنگین اور سر پر موجود خطرہ ہے جس کا عالمی برادری کو فوری طور پر مقابلہ کرنا چاہیے۔"

"ہمیں سات اکتوبر کی ہولناکی بھی یاد ہے اور ہم تمام یرغمالیوں کی رہائی اور فوری جنگ بندی کا مطالبہ کرتے ہیں جو اشد ضروری طور پر درکار انسانی امداد کے لیے رسائی کو آسان بنا سکے۔"

یورپی یونین کمیشن نے خط کی وصولی کی تصدیق کی ہے۔

یوروپی یونین کے ترجمان نے کہا: "جب اسرائیل کی بات آتی ہے تو ہم تمام فریقوں سے بین الاقوامی قانون کا احترام کرنے پر ضرور زور دیتے ہیں اور نوٹ کرتے ہیں کہ احترام ہونا چاہئے اور بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزیوں کا احتساب ہونا چاہئے۔"

دو ہفتے قبل آئرلینڈ کے وزیرِ اعظم لیو وراڈکر نے کہا تھا کہ وہ دیگر سربراہانِ حکومت کے ساتھ بات چیت کر رہے تھے کہ وہ یورپی یونین-اسرائیل اشتراک کے معاہدے کا اس بنیاد پر جائزہ لیں کہ ہو سکتا ہے اسرائیل معاہدے کی انسانی حقوق کی شق کی خلاف ورزی کر رہا ہو۔

23 سال پرانا معاہدہ سامان، خدمات اور سرمائے کی آزادانہ تجارت کے لیے ایک فریم ورک ترتیب دیتا ہے جس کی بنیاد "انسانی حقوق اور جمہوری اصولوں کے احترام" پر ہے۔

تا حال صرف اسپین اور آئرلینڈ نے جائزے کے لیے اپنی حمایت کا عوامی طور پر اظہار کیا ہے۔

وراڈکر نے کہا کہ یورپی یونین کی کئی ریاستیں بھی فلسطینی ریاست کی ممکنہ مشترکہ توثیق کرنے کی بات کر رہی ہیں۔

آئرلینڈ طویل عرصے سے فلسطینیوں کے حقوق کا چیمپئن رہا ہے اور وزراء نے بارہا کہا ہے کہ حکومت فلسطینی ریاست کو تسلیم کرنے پر غور کر رہی ہے۔

اسپین نے بھی بارہا فلسطینی ریاست کو تسلیم کرنے کی وکالت کی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں