ہم بیروت اور کسی دوسری جگہ پر 50 کلومیٹر اندر تک حملہ کر سکتے ہیں: گیلنٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

لبنان- اسرائیل سرحد پر ہونے والی کشیدگی بڑھتی جارہی ہے۔ گزشتہ گھنٹوں کے دوران دونوں فریقوں کے درمیان نشانہ بنانے کے دائرہ کار میں توسیع کی روشنی میں اسرائیل اور حزب اللہ کے درمیان باہمی خطرات میں اضافہ ہو گیا ہے۔

اسرائیلی وزیر دفاع یوآو گیلنٹ نے ایک پریس کانفرنس کے دوران اعلان کیا کہ لبنان کے آسمانوں پر پرواز کرنے والے فضائیہ کے طیارے زیادہ دور دراز کے اہداف کے لیے بھاری بم لے جا سکتے ہیں۔

 جنوب لبنان کے شہر النبطية میں بمباری کا ہدف رہائشی فلیٹ [رائیٹرز]
جنوب لبنان کے شہر النبطية میں بمباری کا ہدف رہائشی فلیٹ [رائیٹرز]

انہوں نے مزید کہا کہ ہم جو کچھ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں اس میں حزب اللہ کے سامنے ہم دس میں سے ایک درجہ بڑھے ہیں۔ ہم صرف 20 کلومیٹر کی گہرائی میں نہیں بلکہ 50 کلومیٹر کے اندر تک بھی حملہ کر سکتے ہیں۔

یہ بات اس وقت سامنے آئی جب گیلنٹ نے اپنے امریکی ہم منصب لائیڈ آسٹن کو جمعرات کو حزب اللہ کے حملوں کا جواب دینے میں کوئی ہچکچاہٹ نہیں ہو گی۔

دریں اثنا حزب اللہ نے نمائندے حسن فضل اللہ کے توسط سے جنوبی لبنان میں حملوں میں شہریوں کی ہلاکت کا جواب دینے کی دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ اسرائیل کو اس کی قیمت چکانا ہو گی۔ بدھ کو اسرائیل نے جنوبی لبنان میں ایک رہائشی اپارٹمنٹ کو نشانہ بنایا تھا، اس حملے میں سات شہری مارے گئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں