بحر احمر پر حملوں کا آغاز غزہ میں جنگ سے پہلے ہوگیا تھا: صدریمنی کمانڈ کونسل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

یمنی کمانڈ کونسل کے صدر رشاد العلیمی نے زور دے کرکہا ہے کہ بحیر احمر کے جہازوں پر حملوں کا آغاز غزہ میں جنگ سے پہلے ہی شروع ہوگیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ "حوثیوں کی جنگ کی سرمایہ کاری غیراخلاقی ہے"۔

انہوں نے العربیہ/الحدث کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا کہ ایران کو ہتھیاروں کی حوثیوں کو منتقلی بند ہونی چاہیے اور حوثیوں کی عسکری امداد کے ذرائع بند کیے جانے چاہئیں۔

انہوں نے کہا کہ حوثیوں کی صلاحیتوں کو ختم کرنے کے لیے یمنی آئینی حکومت کو ملیشیا کے علاقوں پر قابو پانے کے لئے مدد کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ فوجی حملے صرف حوثی فوجی صلاحیتوں کو ختم نہیں کریں گی۔

العلیمی نے کہا کہ اصل مسئلہ ایران میں ہے جو خطے میں تخریبی منصوبوں کو اپناتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ایران یمن اور عام طور پر خطے میں امن کے خلاف ہے۔

"مشکلات میں اضافے کا انتباہ"

یمنی کونسل کے صدر رشاد العلیمی نے کہا کہ نیویگیشن پر حملوں کو روکنے کے بدلے میں حوثی پرسکون نہیں ہوں گے بلکہ اس مسئلے دوگنا ہوجائیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ " امریکا کی طرف سے حوثیوں کو دہشت گرد قرار دینے سے یمنیوں کی تکلیف کم نہیں ہوں گی۔ حوثی امن عمل سے فرار ہو رہے ہیں اور بہانے پیدا کررہے ہیں‘‘۔

انہوں نے کہا کہ "بین الاقوامی نیویگیشن پر ہونے والے حملے امن کے عمل سے فرار کے مترادف ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں