حزب اللہ نے اسرائیل کے علاقے ایلات پر حملے کی دھمکی دے دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

گذشتہ دو دنوں کے دوران جنوبی لبنان کے کئی قصبوں کو نشانہ بنانے والے اسرائیلی حملوں کے بعد ایرانی حمایت یافتہ حزب اللہ نے سرحد پر کشیدگی میں اضافے کی دھمکی دی۔ حالیہ اسرائیلی حملوں میں حزب اللہ اور اس کی اتحادی امل موومنٹ کے امل افراد سمیت تقریباً 15 لبنانی مارے گئے ہیں۔

حزب اللہ کے رہنما حسن نصر اللہ نے اپنے ایک خطاب میں کہا کہ جنوبی لبنان کے علاقے نبطیہ اور السوانہ پر اسرائیلی حملوں کو "تصادم میں پیشرفت" قرار دیا جائے گا۔ ان حملوں میں عام شہریوں کو نشانہ بنایا گیا اور ان میں سے کئی کو موت کے گھاٹ اتار دیا گیا۔ اس بنا پر حسن نصر اللہ نے اسرائیل میں ایلات پر حملے کا اشارہ دے دیا۔


کشیدگی میں اضافہ


انہوں نے یہ دھمکی بھی دی اس قتل عام کا جواب اگلی خطوط پر اور مزید اضافے کے ساتھ ہونا چاہیے۔ انہوں نے یہ بھی اعلان کیا کہ پارٹی کے پاس کریات شمونہ سے ایلات تک اہداف کو نشانہ بنانے کی صلاحیت رکھنے والے میزائل ہیں۔

جمعرات کو اسرائیلی وزیر دفاع یوو گیلانٹ نے خبردار کیا تھا کہ ان کے ملک کی افواج کسی بھی طرح کی کشیدگی کے لیے تیار ہیں۔ ہماری فوج 50 کلومیٹر یا اس سے زیادہ اندر تک جا کر بیروت تک پہنچ کر حملہ کرنے کی صلاحیت بھی رکھتی ہے۔ گیلانٹ نے کہا اسرائیلی طیارے لبنان کے آسمان پر بھاری بم لےکر پرواز کر رہے ہیں جو دور دراز کے اہداف کو نشانہ بناتے ہیں۔


یہ باہمی دھمکیاں لبنان میں اس ایک خونی دن کے بعد سامنے آئی ہیں جب اسرائیل نے بدھ اور جمعرات کو کئی قصبوں پر فضائی حملوں کا سلسلہ شروع کردیا تھا۔ لبنان کی طرف سے کئے گئے میزائل حملے میں ایک اسرائیلی خاتون فوجی ہلاک ہوگئی ہے۔ اسرائیل کے حملوں میں لبنان میں 15 افراد مارے گئے۔ ان افراد میں کمانڈر سمیت حزب اللہ کے تین ارکان بھی شامل تھے۔

سات اکتوبر کو غزہ میں جنگ شروع ہونے کے بعد 133 دنوں میں لبنان اور اسرائیل کے درمیان جھڑپوں میں لبنان میں 268 افراد جاں بحق ہوچکے۔ ان میں 187 حزب اللہ کے ارکان بھی شامل تھے۔ اسرائیل میں 10 سے زیادہ فوجی اور چھ عام شہری بھی ہلاک ہو چکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں