تبوک کے پہاڑوں پر برفباری، موسمِ سرما نے علاقے کو حیرت کدہ بنا دیا

جبل اللوز نے سردی کے باعث برف کی سفید چادر اوڑھ لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

درجۂ حرارت میں نمایاں کمی واقع ہونے سے تبوک میں جبل اللوز کوہسار پر رواں ماہ جمعے کی رات دوسری بار برفباری ہوئی۔

یہ پہاڑی چوٹی جس کے نام کا ترجمہ "باداموں کا پہاڑ" ہے، شمال مغربی سعودی عرب میں واقع ہے اور سطحِ سمندر سے 2,580 میٹر بلند ہے۔ جہاں برف نے مقامی لوگوں اور زائرین کو خوش کیا، وہیں عموماً گرم موسم کی وجہ سے اس کی آمد گزشتہ سال کے مقابلے دو ماہ کی تاخیر سے ہوئی۔

قومی مرکز برائے موسمیات نے مملکت کے شمالی حصوں میں نم جنوبی ہواؤں کی عدم موجودگی کو زیادہ درجۂ حرارت کی وجہ قرار دیا۔

فوٹوگرافر مشیر البلاوی نے سرخ پہاڑوں پر برف باری کی چند شاندار و جیران کن تصاویر کھینچنے کے لیے ڈرون کا استعمال کیا جو انہوں نے مارشل کے نام سے سوشل میڈیا پر پوسٹ کیں۔

متوقع برف باری نے سیاحوں کو تبوک کے برفانی علاقوں میں برف کی سطح بلند ہونے سے پہلے کیمپ لگانے کے لیے تیار کر دیا ہے۔ (ایس پی اے)
متوقع برف باری نے سیاحوں کو تبوک کے برفانی علاقوں میں برف کی سطح بلند ہونے سے پہلے کیمپ لگانے کے لیے تیار کر دیا ہے۔ (ایس پی اے)

انہوں نے عرب نیوز کو بتایا کہ رات کے دوران تین بار برف باری ہوئی۔

انہوں نے کہا، "پہلی شام 7 بجے تھی، پھر 9:40 بجے۔ اور آخری ہفتہ کو صبح 1:30 بجے۔ درجۂ حرارت کم رہنے کی وجہ سے طلوعِ آفتاب تک برف گرتی رہی۔"

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں