سعودی کافی کے مرکز جازان میں کافی نمائش میں ہزاروں افراد کی شرکت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

سعودی عرب کے علاقے جازان میں منعقد ہونےوالی بین الاقوامی کافی نمائش میں دنیا بھرسے کافی کے شوقین ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ اتنی کثیر تعداد میں شرکت ایونٹ کی بین الاقوامی پذیرائی کا ثبوت ہے۔

جازان ریجن کی ترقی کے لیے اسٹریٹجک آفس کے مشیر اور بین الاقوامی سعودی کافی نمائش کے ترجمان ڈاکٹر متعب الکحیل نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو بتایا کہ بین الاقوامی سعودی کافی نمائش اور اس کے ساتھ ہونے والی تقریبات کے زائرین نے نمائش میں بہت سے سرکاری شعبوں میں مجموعی طور پر ایک لاکھ بیس ہزار sy زائد وزٹرز نے شرکت کی۔

الکحیل نے کہا کہ سعودی کافی بین الاقوامی سطح پر اپنے اعلیٰ معیار ، مخصوص اور منفرد ذائقے کی وجہ سے ممتاز مقام رکھتی ہے، جوکہ کافی کے شائقین کے ذوق اور پسند کے مطابق۔ یہ جازان میں کافی کی کاشت کے لیے موسمی حالات اور آب و ہوا کی وجہ سے موزوں علاقوں میں اگائی جاتی ہے۔ اس کافی کا سعودی کافی کی پیداوار کے معیار میں اہم حصہ ہےاور اس میں سرمایہ کاری کے مواقع پیدا کرتی ہے۔ حکومت سعودی کافی کی کاشت کو فروغ دینے اور اس کے معیار کو بہتر بنانے کے منصوبوں کے ذریعے بہت سے پروگراموں اور اقدامات کے ساتھ کافی کے منصوبوں کو آگے بڑھا رہی ہے۔

کافی کی پیداوار میں اضافہ

متعب الکلحیل نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ کافی کے منصوبوں میں 2026ء تک 1.2 ملین کافی کے درخت لگا کر کافی کے درختوں کی تعداد میں اضافہ کرنا ہے۔ سعودی عرب میں کافی کی مقدار اور معیار کے حصول کے لیے "وژن 2030" کے اہداف کے تحت کام جاری ہے۔ اس پلان کے تحت جازان کے علاقے کو کافی کی صنعت میں پیداوار اور عالمی تجارتی تبادلے کا پلیٹ فارم بنانے میں مدد ملے گی۔

آج جازان میں کافی کے درختوں کی تعداد چار لاکھ سے زائد ہے، ان کی پیداوار 1000 ٹن سالانہ سے زیادہ ہے، جب کہ فارموں کی تعداد 2000 سے زیادہ ہو چکی ہے۔ نجی شعبے کے ذریعے متعدد منصوبے نافذ کیے گئے ہیں جن میں 2022ء کے آخر تک جازان میں زرعی ترقیاتی فنڈ کی طرف سے فراہم کردہ فنڈنگ کا حجم تقریباً 1.9 ارب ریال ہے۔ جازان کے خطے میں سرمایہ کاری کے مواقع کی تعداد 79 تک پہنچ گئی ہے۔

کافی کاشت کرنے والے160 بڑے خاندان

متعب الکحیل نے مزید کہا کہ نمائش میں متعدد سرکاری اداروں نے شرکت کی، جن میں وزارت سرمایہ کاری، وزارت ماحولیات، پانی و زراعت، رائل کمیشن برائے جبیل اور ینبع، سعودی کافی کمپنی، کُلنری آرٹس اتھارٹی، بہت سے بین الاقوامی اور مقامی ادارے شامل ہیں۔ اس کے علاوہ کافی کے 300 سے زیادہ اداروں اور 160 سے زیادہ کافی کے مقامی خاندانوں نے شرکت کی۔

اپنے پہلے ایڈیشن میں نمائش میں متعدد دیگر تقریبات اور سرگرمیاں شامل تھیں، جن میں کافی کاشتکاروں کے لیے خصوصی تربیتی کورسز، ورکشاپس اور میٹنگز شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں