اسرائیل کے دمشق پر میزائل حملے، حفاظتی زون میں کثیر منزلہ عمارت ہدف بنی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیل نے بدھ کے روز شامی دارالحکومت دمشق کے اہم ضلع کافر ساؤسہ کی رہائشی عمارت پر میزائل حملہ کیا ہے۔ اس عمارت کے پڑوس میں کئی دوسری رہائشی عمارات کے علاوہ تعلیمی ادارے اور ایرانی ثقافتی مرکز بھی واقع ہے۔

یہ علاقہ اور حملے کی زد میں آنے والی عمارت انتہائی حفاظتی حصار کے اندر سمجھی جاتی ہے۔ اس ضلع میں اسرائیل نے پچھلے سال فروری میں بھی حملہ کیا تھا ، جس کے نتیجے میں ایرانی فوجی ماہرین کی ہلاکتیں ہوئی تھیں۔ اب ایک سال بعد ایک بار پھر اسی 'ہائی سیکیورٹی زون ' میں واقعہ عمارت کو نشانہ بنایا گیا ہے۔

شام کے سرکاری خبر رساں ادارے ' ثنا ' کے مطابق اسرائیلی میزائل حملہ ایک رہائشی عمارت پر تھا مگر کوئی جانی نقصان رپورٹ نہیں کیا گیا ہے۔ خبر رساں ادارے نے ایک کثیر منزلہ عمارت کی ایک ایسی تصویر رپورٹ کا حصہ بنائی ہے جس میں عمارت کا ایک حصہ کھایا گیا ہے۔

عینی شاہدین نے بین الاقوامی خبر رساں ادارے 'رائٹرز' کو بتایا ' یکے بعد دیگرے کئی دھماکوں کی آوزایں سنی گئیں۔ جس سے قریبی سکول کے بچے خوفزدہ ہو گئے۔اس کے بعد ایمبولینسز کو دوڑتے ہوئے دیکھا گیا۔

دمشق میں حملوں کے مناظر
دمشق میں حملوں کے مناظر

دوسری جانب فوری طور پر اسرائیلی فوج کی طرف سے اس بارے میں کوئی تبصرہ نہیں کیا گیا ہے۔ ایران شامی صدر بشارالاسد کا دیرینہ حامی ہے اور شام کی حالیہ خانہ جنگی میں بھی ایران نے بشارالاسد کا ساتھ دیا ہے، ایرانی حمایت یافتہ عسکری گروپ اور ایرانی تنصیبات بھی شام میں اسرائیلی فوج کے اہم اہداف میں شامل رہی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں