البغدادی کیلا مولر کی گرفتاری سے پہلے ہی امریکہ کو مطلوب تھا: بیوہ البغدادی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

داعش کے سابق سربراہ ابو بکر البغدادی کی بیوہ نے کہا ہے کہ ان کا شوہر امریکی شہری کیلا مولر کے قید کیے جانے سے پہلے ہی امریکہ کو مطلوب تھا۔

داعش سربراہ کی بیوہ نے یہ بات ' العربیہ' کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں کیا ہے۔ واضح رہے البغدادی کی بیوہ اسماء محمد پہلی بیوی کے طور پر ان کے نکاح میں آئی تھیں۔

واضح رہے کیلا مولر امریکی ریاست ایروزینا سے تعلق رکھنے والی ایک شہری تھی جو ایک امدادی کارکن کے طور پر شام گئی جہاں اسے داعش نے اگست دو ہزار تیرہ میں پکڑ لیا تھا۔داعش نے بعد ازاں مولر کی موت کا 2015 میں اعلان کیا تھا۔

تاہم داعش کا موقف تھا کہ مولر کی ہلاکت اردن کی طرف سے کیے گئے ایک ڈرون حملے کے نتیجے میں ہوئی۔

البغدادی کی بیوہ ان دنوں عراق میں قید ہیں

بیوہ نے اپنے انٹرویو کے دوران کہا ' میں مولر سے ایک بار ملی تھی۔ کیونکہ وہ البغدادی کے غلاموں میں سے ایک تھی۔ اس کے علاوہ ان کے پاس مولر کے بارے میں کوئی مزید اطلاع نہیں ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ نے اکتوبر 2019 میں البغدادی پر فوجی حملہ کر کے ہلاک کر دیا تھا۔ امریکہ کا یہ حملہ شمال مغربی شام میں کیا گیا تھا۔ اس سے پہلے البغدادی پانچ سال تک اپنی اعلان کردہ خلافت کے سربراہ کے طور پر داعش کی رہنمائی کرتا رہا۔

امریکی فوج داعش کو عراق میں 2017 میں جبکہ شام میں 2019 شکست دینے میں کامیاب ہوئی مگر اب بھی داعش کی باقیات موجود ہیں جو حملے کرتی رہتی ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں