غزہ میں وحشیانہ جنگ روکی جائے ، امدادی کارروائیاں تیز کی جائیں: وزیر خارجہ ترکیہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ترکیہ کے وزیر خارجہ خاقان فیدان نے کہا ہے' بین الاقوامی برادری کو غزہ میں جنگ بندی اور فلسطینی مسئلے کے دو ریاستی حل کے لیے زیادہ سرگرمی سے اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔

انہوں نے ان خیالات کا اظہار گروپ 20 کے وزرائے خارجہ کے اجلاس کے دوران بات چیت کرتے ہوئے کیا ہے ۔ وزرائے خارجہ کا اجلاس برازیل کی میزبانی میں جاری ہے۔

ترکیہ غزہ میں اسرائیلی جنگ کا سخت نقاد ہے اس نے بار بار غزہ میں جنگ بندی کا مطالبہ کیا ہے اور فلسطینیوں کی غزہ میں نسل کشی روکنے کا مطالبہ کیا ہے۔ ترکیہ فلسطینی مزاحمتی گروپ حماس کا حامی ہے اور دیگر نیٹو ارکان یا یورپی یونین کی طرح حماس کو دہشت گرد تنظیم قرار نہیں دیتا ہے۔

خاقان فیدان نے وزرائے خارجہ کے اجلاس کے دوران جرمنی، امریکہ اور مصر کے نمائندوں سے بات کرتے ہوئے کہا ' غزہ میں جاری وحشت ناک حملوں کو لازماً روکا جانا چاہیے۔ اس لیے اس پلیٹ فارم پر بھی غور کیا جانا چاہیے کہ کس طرح غزہ میں فوری جنگ بندی ممکن ہو سکتی ہے اور کس طرح غزہ میں زیادہ سے زیادہ امدادی سامان پہنچایا جا سکتا ہے۔ '

وزیر خارجہ ترکیہ امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن اور جرمنی کی وزیر خارجہ اینا لینا بئیر باک سے بھی غزہ میں مکمل جنگ بندی ممکن بنانے کے لیے کہا۔ ذرائع کے مطابق انہوں نے اس موقع پر ٹھوس اقدامات کرنے کے لیے کہا تاکہ غزہ میں جاری جنگ رک سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں