لبنان میں ایک شخص کو کھمبے کے ساتھ باندھے جانے کے توہین آمیز واقعے کا نوٹس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنان میں گذشتہ دو دنوں سے سوشل میڈیا پرایک ویڈیو گردش کررہی ہے جس میں وسطی بقاع کے قصبے سعدنایل میں ایک شخص کو کھمبے کے ساتھ باندھا دیکھا جا سکتا ہے۔

اس واقعے کی ویڈیو سامنے آنے کے بعد لبنانی عدلیہ نے نوٹس لیتے ہوئے اس واقعے کی انکوائری شروع کی ہے۔

واقعے کی انکوائرے کے دوران حیران کن تفصیلات سامنے آئی ہیں۔ ’العربیہ‘اور الحدث نے اس واقعے کے عینی شادین سے بات کی اور پتہ چلا کہ سوسو نامی لڑکی نے پیسوں کے عوض انہیں امریکہ میں رہنے والے ایک عیسائی پادری کی تحریر پڑھنے کو کہا۔

ایک صحافی نے پروگرام”تفاعلکم“میں گفتگوکرتے ہوئے بتایا کہ یہ کہانی سننے والوں کو حیران کر دے گی کیونکہ اس کا گدھوں کی فروخت سے کوئی تعلق نہیں۔ وجہ اس سے بھی زیادہ عجیب ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک مذہبی عالم نے سوسو نامی ایک شامی لڑکی کے سے کہا کہ وہ ٹک ٹاک پر نوجوان مسلمانوں کو دو سو ڈالر ماہانہ کے عوض عیسائیت قبول کرنے پرآمادہ کریں۔

جہاں تک نوجوانوں کا تعلق ہے وہ ویڈیو کلپ کے لیے 20 وصول کریں گے، بشرطیکہ مذہبی رہ نما کو "مشنری" تنظیموں سے تعاون حاصل ہو۔

ان کلپس نے مسلمانوں کو مشتعل کیا اورقریب تھا کہ تعلبایا قصبے میں مسلمان عیسائی پڑوسیوں کے ساتھ جھگڑے کی شکل اختیار کر لیتے۔

اس کیس کو ختم کرنے کے لیے ملوث افراد میں سے ایک ملوث شخص کو پکڑ کر کھمبے سے باندھ دیا۔ حکام نے لڑکی سوسو کے علاوہ انہیں گرفتار کر لیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں