جنوبی لبنان میں اسرائیلی حملہ ، کم از کم دو حزب اللہ جنگجو ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جنوبی لبنان میں جمعرات کے روز اسرائیلی حملے کے نتیجے میں حزب اللہ کے کم ازکم دو جنگجو ہلاک اور تین زخمی ہو گئے ہیں۔ سیکیورٹی ذرائع کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ یہ حملے ڈرون طیارے کے ذریعے کیے گئے ہیں۔

ایرانی حمایت یافتہ لبنانی عسکری گروپ اور اسرائیل کے درمیان لبنان اسرائیل سرحد اور اس کے آر پار خصوصاً سرحد پار لبنانی علاقے میں اب آئے روز ہونے والے آتشیں واقعات سنگینی اختیار کرتے جا رہے ہیں۔ یہ شدت سات اکتوبر کے بعد سامنے آئی ہے۔

اسرائیلی سیکیورٹی ذرائع کے مطابق جنوبی لبنان میں اسرائیل نے کافر رومن میں ایک عمارت کو نشانہ بنانے کے لیے ڈرون طیارے کے ذریعے دو گائیڈڈ میزائلوں سے حملہ کیا۔ یہ علاقہ اسرائیلی سرحد سے تقریباً 12 کلو میٹر کے فاصلے پر ہے۔

دوسری جانب فلسطینی مزاحمتی تحریک حماس کی اتحاد حزب اللہ نے بھی دعویٰ کیا ہے کہ اس نے اسرائیلی فورسز پر جمعرات کے روز لگاتار حملے کیے ہیں۔ ان لگاتار حملوں سے اسرائیلی فوجی ٹھکانوں کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ حزب اللہ کے مطابق یہ حملے اسرائیل کی طرف سے لبنانی سرحدی دیہات میں شہریوں کے گھروں کو نشانہ بنائے جانے کے جواب میں کیے گئے ہیں۔

اسرائیل اور حزب اللہ کے درمیان 2006 کے بعد یہ اب تک کی شدید ترین کشیدگی ہے۔ یہ سلسلہ سات اکتوبر 2023 کے بعد شروع ہوا تھا اور اب تک اسرائیلی حملوں کے نتیجے میں 273 لبنانی ہلاک ہو چکے ہیں۔ ان میں 42 عام لبنانی بتائے جاتے ہیں۔

جبکہ حزب اللہ کی طرف سے اسرائیلی فوجی مراکز پر کیے گئے حملوں کے نتیجے میں اب تک اسرائیل کے 10 فوجیوں سمیت کل 16 افراد مارے گئے ہیں۔ گذشتہ ہفتے حزب اللہ کے سربراہ حسن نصراللہ نے اسرائیل کی طرف سے ایک حملے میں پانچ بچوں سمیت دس لبنانیوں کی ہلاکت پر دھمکی دی تھی کہ اسرائیل سے اس کا بدلہ لیا جائے گا۔

جمعرات سے ایک روز پہلے بدھ کو بھی اسرائیلی حملے میں ایک لبنانی خاتون ہلاک ہو گئی ہے، تاہم کشیدگی کا یہ سلسلہ ابھی چل رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں