روایتی ملبوسات پہنے سعودی شہریوں کا یوم تاسیس پر جشن

تمام عمر کے افراد نے شرکت کرنے، سوشل میڈیا پر رنگارنگ تصاویر اور حب الوطنی سے بھرپور پوسٹس کی گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے یوم تاسیس پر بچوں، لڑکیوں اور نوجوانوں نے روایتی ملبوسات زیب تن کئے جو سعودی عرب کے خطوں کے درمیان ثقافتوں کی ہم آہنگی کی نشاندہی کرتے ہیں۔

ثقافت کی یہ جھلک جو آج مملکت کی تمام تقریبات میں نظر آرہی تھی، سعودی عرب کی 300 سال کی تاریخ سے ثقافتی وابستگی کے فروغ کے لیے ہے۔

جشن میں تمام عمر کے افراد نے شرکت کی ، سوشل میڈیا پر رنگارنگ تصاویر اور حب الوطنی سے بھرپور پوسٹس کی گئیں۔

نوجوانوں نے سوشل میڈیا کے ذریعے تین صدیوں پر محیط ماضی پر فخر کا اظہار کرتے ہوئے ملک میں سلامتی اور خوشحالی قائم کرنے والے ائمہ و بادشاہوں کے کردار کو یاد کیا۔ اور ملک کی سلامتی کے لیے دعائیں مانگیں۔

آج، سعودی عرب "یوم تاسیس" منا کر رہا ہے۔ مملکت کی تاریخی وسعت جو پہلی سعودی ریاست، پھر دوسری سعودی ریاست، اور پھر تیسری سعودی ریاست، کے قیام کے بعد سے تین صدیوں پر محیط ہے۔ اس کے اتحاد کی جڑیں بانی شاہ عبدالعزیز بن عبدالرحمن آل سعود نے رکھی تھیں اور ان کے صالح بیٹوں نے ان کے بعد اس مبارک ملک کی تعمیر اور خوشحالی میں اپنا حصہ ڈالا۔

اس تاریخی دن کو منانا دنیا میں اس مملکت کے نمایاں مقام تک پہنچنے کی جدوجہد اور مراحل کی عکاسی کرتا ہے۔ خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز کی قیادت میں یہ خوشحالی اور ترقی کے دور میں تمام شعبوں میں پے در پے کامیابیوں کا مشاہدہ کر رہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں