فلسطین اسرائیل تنازع

مغربی کنارے کے عسکریت پسند کو فضائی حملے میں ہلاک کر دیا: اسرائیلی فوج

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیلی فوج نے جمعے کو کہا کہ ایک فلسطینی عسکریت پسند جو فائرنگ کے حملے کے لیے جا رہا تھا، ایک دن پہلے مقبوضہ مغربی کنارے کے شہر جنین میں ایک ڈرون حملے میں ہلاک ہو گیا۔

فوج نے ایک بیان میں کہا کہ اسلامی جہاد گروپ سے تعلق رکھنے والے یاسر حنون کو پہلے "دہشت گرد تنظیم کی عسکری سرگرمیوں" میں ملوث ہونے پر حراست میں لیا گیا تھا۔

بیان میں مزید تفصیلات بتائے بغیر کہا گیا کہ جینن پناہ گزین کیمپ کے رہائشی کو "فائرنگ کے ایک اور حملے کے لیے جاتے ہوئے راستے میں ختم کر دیا گیا۔"

ایک عینی شاہد نے بتایا کہ جمعرات کو ہونے والے حملے کے بعد کار میں موجود ہتھیاروں میں دھماکہ ہو گیا۔

فوج نے کہا کہ حنون اسرائیلی برادریوں کو نشانہ بنانے کے ساتھ ساتھ مغربی کنارے میں فوجیوں اور فوجی چوکیوں پر فائرنگ کے متعدد حملوں میں ملوث تھا۔

فلسطینی خبر رساں ادارے وافا نے کہا ہے کہ حملے میں دو افراد ہلاک اور چار زخمی ہوئے ہیں۔

اے ایف پی کی فوٹیج میں دکھایا گیا ہے کہ ایک گاڑی حملے سے بری طرح جل گئی اور اس کی چھت پھٹ گئی گویا اس پر ڈبہ کھولنے والا اوزار استعمال ہوا ہو۔

اس حملے کے عینی شاہد اسید شیلبی نے اے ایف پی کو بتایا کہ "مسلسل دو میزائل" گاڑی کو لگے۔

انہوں نے کہا، "صورتِ حال خطرناک تھی۔ گاڑی میں موجود ہتھیار دھماکے سے پھٹ رہے تھے۔"

جمعرات کے روز ایک یہودی بستی کے قریب مغربی کنارے کی ایک گنجان شاہراہ پر تین فلسطینی مسلح افراد نے گاڑیوں پر فائرنگ کر دی جس میں ایک اسرائیلی شخص ہلاک اور آٹھ دیگر زخمی ہوئے۔ اس کے بعد ڈرون حملہ ہوا۔

مسلح افراد مارے گئے

سات اکتوبر کو غزہ میں اسرائیل اور حماس کے درمیان جنگ شروع ہونے کے بعد سے مغربی کنارے میں تشدد میں اضافہ دیکھا گیا ہے جو تقریباً دو عشروں میں نظر نہیں آیا تھا۔

رام اللہ میں وزارتِ صحت کے مطابق جنگ شروع ہونے کے بعد سے اسرائیلی فوجیوں اور آباد کاروں نے مغربی کنارے میں کم از کم 400 فلسطینیوں کو ہلاک کر دیا ہے۔

اسلامی جہاد غزہ میں حماس کے عسکریت پسندوں کے ساتھ مل کر لڑ رہا ہے۔

غزہ جنگ اسرائیل پر حماس کے ایک غیر معمولی حملے کے بعد شروع ہوئی جس کے نتیجے میں تقریباً 1,160 افراد ہلاک ہوئے جن میں سے زیادہ تر عام شہری تھے۔

حماس کے زیر انتظام علاقے کی وزارتِ صحت کے مطابق اسرائیل کی جوابی بمباری اور غزہ میں زمینی کارروائی کے نتیجے میں کم از کم 29,410 فلسطینی جاں بحق ہو چکے ہیں جن میں زیادہ تر خواتین اور بچے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں