رفح میں ایک سرکاری ہسپتال 15 لاکھ لوگوں کی خدمت کر رہا: میئر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

غزہ کی پٹی میں اسرائیل کی جنگ 4 ماہ سے زائد عرصے سے جاری ہے۔ رفح کے میئر نے کہا ہے کہ مصر کی سرحد پر واقع شہر میں انسانی تباہی بہت زیادہ ہوگئی ہے۔ ڈاکٹر احمد الصوفی نے العربیہ اور الحادث کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ صرف جنگ بندی اور امداد کا فوری داخلہ ہی رفح میں انسانی صورتحال کو بگڑنے سے روک سکتا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ "ہم بے گھر لوگوں کی بھرمار اور بنیادی خدمات کی کمی کا شکار ہیں۔"ڈاکٹر الصوفی نے کہا کہ 60 بستروں کی گنجائش والا صرف ایک سرکاری ہسپتال رفح میں تقریباً 15 لاکھ لوگوں کو خدمات فراہم کر رہا ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ہم ہر 10 دن میں صرف ایک بار پانی فراہم کر سکتے ہیں، یہاں لوگ بھوک سے نڈھال ہیں۔

رفح کے میئر نے بتایا کہ اسرائیلی حملوں کی وجہ سے بڑی تعداد میں مکانات تباہ ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ غزہ شمال سے جنوب تک تباہ ہو گیا ہے۔ صرف رفح شہر باقی رہ گیا ہے۔ انہوں نے کہا "ہم مسلط کردہ محاصرے اور مسلسل اسرائیلی بمباری کی وجہ سے مشکلات کا شکار ہیں۔" یاد رہے سات اکتوبر سے اسرائیلی بربریت میں غزہ کی پٹی میں 29692 فلسطینی شہید ہو چکے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں