غزہ میں جنگ بندی کے لیے قطر میں مذاکرات، اسرائیلی وفد قطر پہنچ گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیلی موساد سربراہ کی قیادت میں مذاکراتی وفد اسرائیل میں کچھ وقت گذارنے کے بعد قطر پہنچ گیا ہے۔ اسرائیلی وفد پیرس سے اتوار کے روز اسی مذاکراتی عمل کے بعد واپس تل ابیب پہنچا تھا جہاں ہفتے کی رات وزیر اعظم اور کابینہ کو وفد ارکان نے تفصیلی بریفنگ دی۔ اتوار اور پیر کا دن اسرائیل میں ہی رکنے کے بعد وفد بعد از دوپہر کے اوقات میں قطر روانہ ہو گیا ہے۔

قطر میں پیرس مذاکرات میں ہونےوالی افہام و تفہیم کے اگلے مرحلے پر بات چیت ہوگی۔ مذاکراتی ایجنڈے میں اسرائیلی نقطہ نظر سے یرغمالیوں کی رہائی اہم ترین ہے جبکہ حماس اور فلسطینیوں کے نقطہ نگاہ میں غزہ میں جنگ بندی اور انسانی بنیادوں پر امدادی سامان کی ترسیل میں آسانی اور سرعت پیدا کرنا ہے۔ حماس غزہ سے اسرائیلی فوج کے مکمل انخلا کا مطالبہ بھی رکھتا ہے ، تاہم ابھی اندازہ نہیں ہے کہ یہ مطالبہ پایہ تسلیم کو پہنچتا ہے یا نہیں۔

اسرائیل جس کی حکومت اور پارلیمنٹ نے دو ٹوک انداز میں خبر دار کیا ہے کہ فلسطینی ریاست کے یکطرفہ فیصلے یا بیرون سے کیے گئے فیصلے کو قبول نہیں کیا جائے ، بلکہ صرف اسی صورت فلسطینی ریاست پر بات اور اس بارے میں امادگی کا امکان ہو سکتا ہے کہ مذاکرات اسرائیل اور فلسطینی براہ راست کریں۔ مگر دلچسپ بات ہے کہ اسرائیلی یرغمالیوں کی رہائی کے لیے مذاکرات بھی اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان نہیں ہو رہے ہیں،۔ تاہم اسرائیل اس سلسلے میں پورا تعاون کر رہا ہے۔

ذرائع کے مطابق قطر پہنچنے والے اسرائیلی وفد میں موساد کے علاوہ اسرائیلی فوج کے حکام بھی شریک ہیں۔ ان ذرائع کے مطابق حماس نے قیدیوں کی یرغمالویں کی رہائی کو وقفے وقفے سے رہا کرنے کی تجویز دی ہے ۔ امکان ظاہر کیا گیا ہے کہ اسرائیلی وفد حماس کی اس بالواسطہ ملنے والی تجویز کو قبول کرلے گا۔ تاہم اسرائیل حماس کی طرف سے چار سے ساڑھے چار ماہ کے لیے جنگ بندی کی تجویز کو رد کیا گیا ہے۔

پچھلے ہفتے اسرائیلی حکام نے پیرس میں اسلی سلسلے میں مذاکرات میں حصہ لیا تھا کہ یرغمالیوں کی رہائی کی صورت پیدا ہو جائے۔ پیرس مذاکرات میں امریکی سی آئی اے چیف ، مصری انٹیلی جنس اور موساد چیف کے علاوہ قطری وزیر خارجہ شیخ محمد بن عبدالرحمان الثانی شریک ہوئے تھے۔

ریاستہائے متحدہ امریکہ کی طرف سے کہا گیا ہے کہ اسرائیل اور غزہ کے درمیان جنگ بندی اور یرغمالیوں کے لیے جارہ کثیر ملکی مذاکرات میں ایک ممکنہ معاہدےکے لیے افہام و تفہیم پیدا ہوئی ہے۔ ان مذاکرات میں امریکی سی آئی اے چیف ولیم برنز پہلے کی طرح ایک بار پھر شریک ہوئے اور مذاکرات کی کامیابی کے لیے سہولتکاری کی۔ تاہم اب قطر میں مذاکراتی دور کے بارے میں اسرائیل کی طرف سے ابھی تک سرکاری طور پر کچھ نہیں کہا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں