فلسطینی اتھارٹی کے وزیر اعظم کا استعفیٰ، امریکہ نے تعریف کر دی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکہ نے فلسطینی اتھارٹی کے وزیر اعظم کے استعفیٰ کی تعریف کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس فیصلے کے نتیجے میں جنگ کے بعد غزہ اور مغربی کنارے کو باہم ملانے میں مدد ملے گی۔ امریکی ترجمان نے استعفے کو اصلاحاتی عمل کے لیے پیش رفت قرار دیا ہے۔

محکمہ خارجہ کے ترجمان میتھیو ملر نے رپورٹروں سے کہا فلسطینی اتھارٹی کےان اصلاحات کے ذریعے خود کو زندہ کرنے کے اقدام کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ لیکن وزیر اعظم کو ' پی اے' کا اندرونی معاملے کا نام بھی دیا ہے۔

امریکی ترجمان نے اس اصلاحاتی عمل کا پس منظر بتاتے ہوئے کہا ' امریکی وزیر خارجہ بلنکن نے پی اے کے صدر محمود عباس اس نوعیت اقدامات کے لیے کہا تھا ، اس لیے ہم سمجھتے ہیں کہ یہ مثبت اقدامات ہیں۔ '

میتھیو ملر نے کہا ' ہمارے خیال میں یہ فلسطینی اتھارٹی کے تحت غزہ اور مغربی کنارے کو دوبارہ متحد کرنے کی طرف ایک اہم پیش رفت ہے۔'

بلنکن نے رام اللہ میں مقیم فلسطینی اتھارٹی سے جنگ کے بعد غزہ پر اپنا کنٹرول بڑھانے کا کہا تھا، تاہم اس سوچ کو بظاہر اسرائیلی وزیر اعظم کی کٹر دائیں بازو کی مخلوط حکومت کی طرف سے گرم جوشی ظاہر نہیں کی گئی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں