ویڈیو: جیب میں رکھے سکوں نے فلسطینی نوجوان کی جان بچا لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

غزہ میں امدادی سامان لے کر ایک ٹرک جس لمحے داخل ہوا وہ قتل عام میں بدل گیا جس میں 100 سے زائد فلسطینی ہلاک اور زخمی ہو گئے۔

ایک فلسطینی شہری نے اسرائیلی حملے کے بارے میں بتایا کہ کیسے وہ معجزانہ طور پر بچ گیا جب شمالی غزہ کی پٹی میں نابلسی گول چکر کے قریب الرشید اسٹریٹ کو اسرائیلی فوج نے نشانہ بنایا تو عین اس وقت جیب میں رکھے کچھ سکوں نے اسرائیلی فوجیوں کی گولیوں کو سینے پر روک کر ان کی جان بچا لی۔

انہوں نے کہا کہ وہ امداد سے آٹے کا تھیلا وصول کرنے کے انتظار میں زخمی ہو گئے تھے اور ان پاؤں بھی زخمی ہوئے تھے۔

فلسطینی ٹیلی ویژن نے اس سے قبل خبر دی تھی کہ غزہ شہر کے جنوب مغرب میں واقع نابلسی گول چکر کو نشانہ بنانے والی اسرائیلی بمباری میں 40 افراد ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہوئے۔

فلسطینی میڈیا نے آج دن کے اوائل میں بتایا کہ اسرائیلی فورسز نے ان شہریوں کو نشانہ بنایا جو علاقے میں امدادی ٹرکوں کا انتظار کر رہے تھے۔

ہزاروں افراد امداد کے منتظر

دریں اثنا، یورو-میڈیٹیرینین ہیومن رائٹس آبزرویٹری نے اطلاع دی ہے کہ غزہ کے نابلسی گول چکر میں ہزاروں شہری گھنٹوں سے امداد کے منتظر ہیں اور ٹرکوں کے پہنچنے کے فوراً بعد اسرائیلی فورسز نے فائرنگ شروع کر دی۔

غزہ میں وزارت صحت نے کل، بدھ کو بتایا کہ غزہ پر اسرائیلی حملے میں مرنے والوں کی تعداد 29,954 تک پہنچ گئی ہے، جب کہ 7 اکتوبر کو جنگ شروع ہونے کے بعد زخمیوں کی تعداد 70,325 تک پہنچ گئی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں