متحدہ عرب امارات کی سڑکوں پر سب سے بڑا قاتل ڈرائیونگ میں عدم توجہ ہے: رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
6 منٹس read

ملک کی وزارتِ داخلہ کے تازہ ترین دستیاب اعداد و شمار کے مطابق ڈرائیونگ میں عدم توجہ متحدہ عرب امارات کی سڑکوں پر ہلاکتوں کی سب سے بڑی وجہ کے طور پر سامنے آئی ہے جو سڑکوں پر ہونے والی تمام اموات کا ایک چوتھائی حصہ ہے۔

2022 کے اعداد و شمار پر مبنی وزارتِ داخلہ کی رپورٹ ڈرائیونگ میں عدم توجہ کے غلبے اور اس کے تباہ کن نتائج کو نمایاں کرتی ہے۔ اس لاپرواہ رویئے کی وجہ سے کل 85 اموات ہوئیں جو متحدہ عرب امارات میں سڑکوں پر ہونے والی اموات کی بنیادی وجہ ہے۔

 9 دسمبر 2015 کو دبئی، متحدہ عرب امارات میں شیخ زید روڈ کا ایک عمومی منظر۔ (رائٹرز)
9 دسمبر 2015 کو دبئی، متحدہ عرب امارات میں شیخ زید روڈ کا ایک عمومی منظر۔ (رائٹرز)

جنوری 2024 میں عوامی رائے اور ڈیٹا جمع کرنے والی ایک کمپنی یوگوو کی ایک تحقیق کے مطابق اگرچہ گاڑی چلانے والے افراد ڈرائیونگ میں عدم توجہ سے منسلک خطرات سے واقف ہیں لیکن ایک قابلِ ذکر فیصد اب بھی اس رویے میں ملوث ہونے کا اعتراف کرتی ہے۔ عدم توجہ مختلف ذرائع سے پیدا ہو سکتی ہے بشمول ڈرائیور کے اپنے افعال، مسافروں کے رویئے اور بیرونی عوامل۔ جواب دہندگان کی طرف سے عدم توجہ کی نمایاں ترین وجہ ڈرائیونگ کے دوران موبائل فون کا استعمال ہے۔

روڈ سیفٹی یو اے ای کے بانی اور مینیجنگ ڈائریکٹر تھامس ایڈل مین نے کہا: "گاڑی چلانے والے ڈرائیونگ میں عدم توجہ کے خطرات سے آگاہ ہیں لیکن اس کے ساتھ ہی ایک بڑی تعداد میں لوگ اس بات کا اعتراف کرتے ہیں کہ وہ عدم توجہ کے ساتھ ڈرائیونگ کرتے ہیں۔"

"یہ انتہائی اہمیت کا حامل ہے کہ گاڑی چلانے والے عدم توجہ کے ان اسباب پر غور کریں اور قابو پائیں تاکہ خود کو، اپنے مسافروں اور سڑک استعمال کرنے والے دیگر افراد کو فائدہ پہنچے۔ ہماری سڑکوں کا سب سے بڑا قاتل ڈرائیونگ میں عدم توجہ ہے۔"

عوامی نظریات اور رویہ

اس مطالعہ نے متحدہ عرب امارات میں ڈرائیونگ کے بارے میں عوام کے تاثرات پر روشنی ڈالی ہے۔

یوگوو کی اس تحقیق میں متحدہ عرب امارات کے 1,001 رہائشیوں کا سروے کیا گیا تھا جس سے پتہ چلتا ہے کہ 90 فیصد جواب دہندگان نے ڈرائیونگ میں عدم توجہ کو خطرناک سمجھا۔ تاہم صرف 81 فیصد کا دعویٰ ہے کہ وہ ڈرائیونگ کے دوران ہمیشہ پوری توجہ مرکوز رکھتے ہیں جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ گاڑی چلانے والوں کا ایک اہم حصہ سڑک پر اپنی غیر منقسم توجہ نہیں دیتا۔

مطالعہ مزید مختلف آبادیاتی گروپوں میں ارتکاز کی سطح میں تغیرات کو ظاہر کرتا ہے۔

مثلاً 19-24 سال کی عمر کے نوجوان ڈرائیوروں میں سے صرف 77 فیصد ہمیشہ مکمل طور پر مرکوز رہنے کا اعتراف کرتے ہیں جبکہ عرب تارکین اور مغربی باشندے بالترتیب 74 فیصد اور 76 فیصد ارتکاز کی شرح بتاتے ہیں۔

ڈرائیونگ میں عدم توجہ کی بنیادی وجوہات

جواب دہندگان کے تأثرات کی بنیاد پر وزارتِ داخلہ کی رپورٹ متحدہ عرب امارات میں ڈرائیونگ سے عدم توجہ کی پانچ بنیادی وجوہات کی نشاندہی کرتی ہے۔ موبائل فون، دوسرے ڈرائیوروں کا رویہ، نیویگیشن سسٹم، سڑک کے پیچیدہ نظام اور گاڑی میں اشیاء تک پہنچنا۔

اس میں حیران کن طور پر 33 فیصد جواب دہندگان کا دعویٰ ہے کہ ڈرائیونگ کے دوران موبائل فون کا استعمال عدم توجہ کی ایک اہم وجہ ہے۔ یہ مسئلہ خاص طور پر 25-34 عمر کے گروپ (39 فیصد)، عرب تارکینِ وطن (44 فیصد) اور شارجہ میں ڈرائیوروں (58 فیصد) میں نمایاں ہے۔ مزید برآں 22 فیصد جواب دہندگان نے ہینڈز فری کالز کو پریشان کن پایا جس میں مرد جواب دہندگان (26 فیصد) اور اماراتی (48 فیصد) عدم توجہ کی اعلی سطح کی اطلاع دیتے ہیں۔

دوسرے ڈرائیوروں کے رویے کو 44 فیصد جواب دہندگان نے عدم توجہ کی ایک بڑا وجہ قرار دیا ہے۔ خواتین (55 فیصد)، 45 سال یا اس سے زیادہ عمر کے بوڑھے ڈرائیور (63 فیصد)، مغربی باشندے (68 فیصد) اور شارجہ (49 فیصد) اور ابوظہبی (48 فیصد) میں ڈرائیور خاص طور پر اس عنصر سے متأثر ہوئے ہیں۔

تقریباً 28 فیصد جواب دہندگان نیویگیشن سسٹم کو عدم توجہ کی وجہ سمجھتے ہیں جس میں سب سے زیادہ تعداد 35-44 سال کی عمر کے گروپ (38 فیصد) اور مغربی باشندوں (37 فیصد) کی ہے۔

مزید 28 فیصد جواب دہندگان نے متحدہ عرب امارات میں سڑک کے پیچیدہ نظام کو عدم توجہ کی وجہ پایا جس میں سب سے زیادہ تعداد 35-44 سال کی عمر کے گروپ (42 فیصد)، مغربی باشندوں (41 فیصد) اور اماراتیوں (39 فیصد) کی ہے۔

گاڑی کے اندر اشیاء تک پہنچنے کا عمل 21 فیصد جواب دہندگان کے لیے عدم توجہ کی ایک وجہ ہے جس میں خواتین (30 فیصد) اور مغربی باشندے (29 فیصد) زیادہ متأثر ہوئے ہیں۔

علاج اور حل

اس تحقیق میں ایسے اقدامات کی نشاندہی کرنے کی بھی کوشش کی گئی جو گاڑی چلاتے وقت ارتکاز برقرار رکھنے میں مدد فراہم کر سکیں۔ 77 فیصد کی ایک بڑی تعداد کا خیال ہے کہ اپنے موبائل فون کو خاموش یا بند کرنے سے ان کی توجہ کی سطح پوری طرح بہتر ہوتی ہے۔

ایڈل مین نے اس نازک مسئلے سے نمٹنے کے لیے مشترکہ کوششوں کی ضرورت پر زور دیا۔

"ہم سمجھتے ہیں کہ اس اہم نکتے کو حل کرنے کے لیے تمام متعلقین بڑی اور فوری کوششیں کریں۔ گاڑی چلانے والے جانتے ہیں کہ یہ آسان علاج ان کی مدد کرے گا۔ متحدہ عرب امارات کی سڑکوں پر مرکزی قاتل سے نمٹنے کے لیے یہ ایک سادہ سی کارروائی ہے! ہم سب یہ کر سکتے ہیں اور ایسا نہ کرنے کا کوئی بہانہ نہیں ہے۔"

موبائل فون بند کرنے کے علاوہ جواب دہندگان نے دوسرے اقدامات کی نشاندہی کی جو ڈرائیونگ کے دوران ان کی توجہ کی سطح کو بڑھا دیں گے۔ ان میں رفتار محدود کرنے والے (51 فیصد)، اسپیڈ کیمروں کی موجودگی (44 فیصد)، نیویگیشن سسٹم (33 فیصد)، تنہا ڈرائیونگ (28 فیصد)، اور موسیقی یا ریڈیو سننا شامل ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں