بحیرہ احمر : حوثیوں کے حملے کے بعد کارگو جہاز ڈوب گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

حوثیوں کے بحیرہ احمر میں کئی ہفتوں سے جاری حملوں کے نتیجے میں اطلاع آئی ہے کہ روبیمار نامی کارگو جہاز مکمل طور پر ڈوب کر تباہ ہو گیا ہے۔ اس جہاز کو ایرانی حمایت یافتہ یمنی حوثیوں نے کئی روز پہلے نشانہ بنایا تھا۔

تاہم اس کے ڈوبنے کی تصدیق ہفتے کے روز کی گئی ہے۔ روبیمار نامی یہ کارگو جہاز حوثیوں کے حملوں میں اب تک کا پہلا جہاز سہے جو مکمل طور پر ڈوب کر تباہ ہوا ہے۔

واضح رہے حوثیوں کا کہنا ہے کہ وہ غزہ میں اسرائیلی جنگ کے رد عمل میں فلسطینیوں سے یکجہتی کے لیے بحیرہ احمر میں اسرائیلی جہازوں ، اسرائیلی اتحادیوں کے جہاز اور اسرائیل کے لیے نقل و حمل کے لیے بروئے کار جہازوں کو نشانہ بنا رہے ہیں۔

تاہم ان کے ان حملوں کی زد میں امریکہ اور اتحادیوں کے بقول عام تجارتی جہاز بھی آرہے ہیں ۔ جس کے نتیجے میں تیل سمیت بہت ساری ضروری اشیائے صرف کی ترسیل میں صرف رخنہ نہیں آرہا بلکہ ان اخراجات پر بھی بہت برا اثر پڑ رہا ہے۔

ہفتے کے روز کارگو اور میری ٹائم سے متعلق حکام کا کہنا ہے کہ اس کارگو کو کئی روز قبل حوثیوں نے نشانہ بنایا تھا مگر کئی دن بعد یہ حتمی طور پر سمندر میں ڈوب گیا ہے۔ تاہم یہ واح نہیں ہو سکا کہ کتنے دن تک یہ جہاز ڈوبنے کے عمل سے گزرتا رہا اور اس کی اطلاع سامنے کیوں نہ آ سکی۔

یمن کی حوثی حکومت کے ساتھ ساتھ ایک علاقائی فوجی اہلکار نے جہاز کے ڈوبنے کی تصدیق کی لیکن انہوں نے اپنا نام ظاہر نہ کرنے کی درخواست کی ہے۔

روبیمار کے بیروت میں مقیم مینیجر نے فوری طور پر اس واقعہ پر تبصرہ نہیں کیا ہے ۔ یمن کی حکومت کا کہنا ہے کہ بحیرہ احمر میں طوفانی موسم کی وجہ سے جمعہ کو رات گئے روبیمار ڈوب گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں