فلسطین اسرائیل تنازع

رام اللہ: اسرائیلی فوج کے پناہ گزین کیمپ پر حملے میں 16 سالہ فلسطینی ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے فلسطینی اتھارٹی کے ہیڈکوارٹر والے شہر رام اللہ میں پیر کے روز کارروائی کر کے سولہ سالہ فلسطینی بچے کو ہلاک کر دیا ہے۔ یہ فوجی کارروائی رام اللہ میں قائم پناہ گزین کیمپ پر کی گئی ہے۔ اس فوجی کارروائی کو رواں سال کے دوران رام اللہ میں اسرائیل کی سب سے بڑی کارروائی کہا جا رہا ہے۔ علاوہ ازیں 55 لوگوں کو گرفتار کیا ہے۔

عینی شاہدین کے مطابق درجنوں فوجی گاڑیوں پر سوار فوجی شہر میں داخل ہوئے۔

فلسطینی اتھارٹی جس کی سربراہی محمود عباس کرتے ہیں اس کے ہیڈ کوارٹر کے علاقے میں یہ فوجی کارروائی غیر معمولی اہمیت کی حامل ہے۔ فلسطینی وزارت صحت کے مطابق فوجی کارروائی کے دوران سولہ سالہ فلسطینی بچے مصطفی ابو شلباک کو عماری پناہ گزین کیمپ میں ہلاک کیا ہے۔

فلسطینی خبر رساں ادارے "وفا" کے مطابق اسرائیلی فوجیوں نے پناہ گزین کیمپ پر چڑھائی کے دوران فائرنگ کی اور فلسطینیوں کو نشانہ بنایا ہے۔ مصطفی ابو شلباک کو اس دوران سینے اور گردن میں گولیاں لگ گئیں۔

اس واقعے کے بارے میں اسرائیلی فوج نے فوری طور پر درخواست کے باوجود کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔

واضح رہے سات اکتوبر کے بعد سے اسرائیلی فوج اور یہودی آباد کاروں کی طرف سے کیے گئے پر تشدد حملوں میں 400 فلسطینی جاں بحق کیے جا چکے ہیں۔

عینی شاہدین نے بتایا کہ اسرائیلی فوج نے مغربی کنارے میں واقع طولکرم کی ایک سڑک کو بھی اکھاڑ دیا۔

خبر رساں ادارے "وفا" نے رپورٹ کیا ہے کہ اسرائیلی فوج نے نابلس میں دھاوا بولا اور معاذ المصری نامی فلسطینی کے گھر کو آگ لگا دی۔ خیال رہے پچھلے سال اپریل میں نابلس ہی میں برطانوی شہریت کی حامل فلسطینی خاتون اور اس کی دو بچیوں کو اسرائیلی فوج نے ایک حملہ میں قتل کر دیا تھا۔ جبکہ معاذ کو گزشتہ ماہ مئی میں اسرائیلی فورسز نے قتل کر دیا تھا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں