رمضان 2024: متحدہ عرب امارات نے نجی شعبے کے ملازمین کے لیے اوقات کار کم کردیئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات کی وزارت برائے انسانی وسائل و ایمریٹائزیشن (ایم او ایچ آر ای) نے پیر کو اعلان کیا کہ ملک میں ماہِ رمضان میں نجی شعبے کے ملازمین کے کام کے اوقات کم ہو جائیں گے۔

ملک بھر میں پرائیویٹ سیکٹر کے ملازمین عموماً دن میں آٹھ سے نو گھنٹے کام کرتے ہیں لیکن وہ مسلمانوں کے مقدس مہینے کے دوران اپنے یومیہ کام کے اوقات میں دو گھنٹے کی کمی کا لطف اٹھائیں گے۔

ایکس پر ایک بیان میں وزارت نے کہا: "اپنے کام کی ضروریات اور نوعیت کے مطابق کمپنیاں رمضان کے دوران روزانہ کام کے اوقات کی حدود میں لچکدار یا دور دراز کام کے طریقوں کا اطلاق کر سکتی ہیں۔"

دبئی اسلامک افیئرز اینڈ چیریٹیبل ایکٹیویٹیز ڈیپارٹمنٹ (IACAD) کے مطابق رویتِ ہلال کمیٹی کی جانب سے تصدیق کے بعد 12 مارچ سے شروع ہونے کی امید ہے۔

رمضان کے دوران روزے کی حالت میں مسلمان طلوعِ آفتاب سے غروبِ آفتاب تک کھانے پینے سے پرہیز کرتے اور مذہبی رسومات میں مشغول رہتے ہیں جو ضبطِ نفس، خیرات، برادری اور روحانیت کی حوصلہ افزائی کرتی ہیں۔

فیڈرل اتھارٹی فار گورنمنٹ ہیومن ریسورسز (FAHR) نے پہلے ہی وفاقی حکام کے ملازمین کے لیے رمضان المبارک کے دوران سرکاری اوقاتِ کار مقرر کرنے کا سرکلر جاری کر دیا تھا۔

مقدس مہینے میں تمام وزارتیں اور وفاقی ایجنسیاں صبح 9 بجے سے دوپہر 2:30 بجے تک پیر تا جمعرات کام کرتی نظر آئیں گی۔

جمعہ کے روز کام کے اوقات صبح 9 بجے سے دوپہر 12 بجے تک ہوتے ہیں جب تک کہ کام کی نوعیت دوسری صورت میں ضروری نہ ہو۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں