المناک مناظر،محاصرے کی وجہ سے غزہ کے لوگ امداد کے لیے تڑپ رہے ہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

غزہ میں گذشتہ ہفتے نابلسی گول چکر کا سانحہ اور اس کے مناظرایک بار پھر تازہ ہوگئے ہیں۔گذشتہ روز اسرائیلی فوج نے ایک بار پھر امداد لینے کے لیے جمع فلسطینیوں پر فائرنگ کی تو نابلسی گول چکرکے قتل عام کی یاد ایک بار پھر تازہ ہوگئی۔

دل دہلا دینے والے مناظر

سوشل میڈیا پر پھیلائی جانے والی فوٹیج میں دکھایا گیا ہے کہ فلسطینیوں کا ہجوم شمالی غزہ کی پٹی میں ایئر ڈراپ امداد حاصل کرنے کی کوشش کر رہا ہے، جو مہینوں سے محصور ہے۔

سینکڑوں کی تعداد میں لوگ ملبے کے اوپر جمع ہیں اور ہوائی جہازوں کے ذریعے گرائے گئے امدادی تھیلوں تک پہنچنے کے لیے بھاگ رہے ہیں۔

یہ اس وقت سامنے آیا جب امریکی سینٹرل کمانڈ نے منگل کو اردنی فضائیہ کے تعاون سے امداد کے ایک ایئر ڈراپ کے نفاذ کا اعلان کیا، تاکہ جنگ سے متاثرہ شہریوں کو ریلیف فراہم کیا جا سکے۔

یہ اعلان بڑھتے ہوئے بین الاقوامی انتباہات کے درمیان سامنے آیا ہے کہ غزہ کی ایک تہائی آبادی قحط کے دہانے پر پہنچ رہی ہے۔

قابل ذکر ہے کہ اقوام متحدہ کے رابطہ دفتر برائے انسانی امور نے گذشتہ ہفتے خبردار کیا تھا کہ اسرائیلی حملے کے آغاز کے تقریباً پانچ ماہ بعدغزہ کی پٹی کی ایک چوتھائی آبادی یعنی چھ لاکھ افراد قحط کے دھانے پر ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں