سعودی عرب: وزارت تجارت کےایک ماہ کے دوران اسٹوروں کے پانچ ہزار مانیٹرنگ دورے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

رمضان المبارک اورعمرہ سیزن کے لیے اپنے موسمی منصوبے کے حصے کے طور پرسعودی عرب کی وزارت تجارت نے مکہ مکرمہ اورمدینہ منورہ ایک ماہ کے دوران کمرشل اسٹورز، ہول سیل مارکیٹوں، گوداموں اور قیمتی دھاتوں اور قیمتی پتھروں کی مارکیٹوں میں 4,900 سے زیادہ مانیٹرنگ دورے کیے۔

وزارت تجارت کے ترجمان عبدالرحمٰن الحسین نے بتایا کہ ان مانیٹرنگ دوروں کا مقصد کاروباری مراکز کوصارفین کے حوالے سے قواعدو ضوابط اور قوانین کی پابندی کو یقینی بنانا ہے۔

خوراک کے ذخیرے کی دستیابی پر عمل درآمد

ترجمان الحسین نے ’العربیہ ڈاٹ نیٹ‘ کو بتایا وزارت تجارت اپنے مانیٹرنگ دوروں کے ذریعے بالعموم پورے ملک اور بالخصوص مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ کے علاقوں کے تمام علاقوں میں بنیادی خوراک اور سامان کی دستیابی کی نگرانی کر رہی ہے تاکہ صارفین کی ضروریات کو پورا کرنے کے علاوہ سپلائرز کی جانب سے کسی قسم کی خلاف ورزی کی نشاندہی کے بعد ان پر کارروائی کرنا ہے۔

مکہ مدینہ میں مانیٹرنگ کا عمل تیز

عبدالرحمان الحسین نے مزید کہا کہ وزارت تجارت کی نگران ٹیموں نے عمرہ سیزن کے دوران مکہ مکرمہ اور مدینہ منورہ جانے والی سڑکوں پر اپنے دورے تیز کردیے ہیں تاکہ سروس سینٹرز، گیس اسٹیشنز اور کار کے ٹائر اور آئل اسٹورز کا جائزہ لیا جا سکے۔

سبسڈی کا آغاز

جلد خریداری کی حوصلہ افزائی کے لیے وزارت تجارت نے رمضان المبارک اورعید الفطر کے مواقع پر تجارتی اداروں اور آن لائن اسٹورز میں 5 شوال 1445ھ تک بعض اشیاء پرخصوصی رعایت دی جائےگی۔

ابتدائی خریداری

وزارت تجارت کے ترجمان نے کہا کہ قبل از وقت خریداری بغیر کسی تاخیر کے درخواست کردہ شے کی آمد کو یقینی بناتی ہےاور خریدار کے آرڈر کو واپس کرنے، تبادلہ کرنے اور منسوخ کرنے کے حقوق کو محفوظ رکھتی ہے۔ یہ خریداروں کو پیشکشوں، رعایتوں اور متعدد سے فائدہ اٹھانے کی اجازت بھی دیتا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں