شمالی غزہ تک امدادی سامان پہنچانے کے لیے اقوام متحدہ کو نیا راستہ مل گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اقوام متحدہ نے شمالی غزہ کے بھوک اور قحط کی زد میں آئے علاقے میں خوراک اور امدادی سامان پہنچانے کے لیے منگل کے روز نیا راستہ استعمال کیا ہے۔ یہ پچھلے کم از کم تین ہفتوں کے دوران زمینی راستے سے خوارک اور امدادی سامان پہنچانے کی پہلی کامیاب کوشش رہی۔

اس راستے کے ملنے کی ایک وجہ اسرائیل پر بڑھا ہواعالمی دباؤ بنا ہے۔ تاکہ قحط کے خطرات میں گھرے ہوئے غزہ کے ساحلی علاقوں تک مزید رسائی کی اجازت دی جائے۔

اسرائیل کے فوجی قبضے میں فلسطینی علاقے کے لیے اقوام متحدہ کے امدادی رابطہ کار جیمی میک گولڈرک کا کہنا ہے کہ' ورلڈ فوڈ پروگرام کے امدادی قافلے نے منگل کے روز اسرائیلی فوجی سڑک کا استعمال کیا جو غزہ کی سرحد کی باڑ کے ساتھ گزرتی ہے تاکہ غزہ کی پٹی کے شمالی حصے تک پہنچا جا سکے۔'

دوسری جانب عالمی خوراک پروگرام کی ترجمان شازہ مغربی نے کہا ہے کہ منگل کی صبح خوراک کے عالمی پروگرام نے 25,000 لوگوں کے لیے خوراک غزہ سٹی پہنچائی۔ کئی ہفتوں کے بعد اقوام متحدہ کے اس ادارے کی طرف سے شمالی غزہ میں خوراک پہنچانا ممکن ہوا ہے۔

مغربی نےمزید کہا ' اب ہم بڑے پیمانے پرامدادپہنچانے کی امید کر رہے ہیں۔ قحط کے دہانے پرپہنچے شمالی غزہ کے لوگوں کے ساتھ مستقل رہنے کے لیے ہمیں رسائی کی ضرورت ہے۔ اس مقصد کے لیے شمالی غزہ میں براہ راست داخل ہونے کی بھی ضرورت ہے۔'

واضح رہے اقوام متحدہ کی ہی ایک رپورٹ کے مطابق اس وقت غزہ میں کم از کم 576,000 افراد قحط کی زد پر ہیں۔ جوغزہ کی مجموعی آبادی کا ایک چوتھائی بنتی ہے۔ ادھر امریکہ کی قومی سلامتی کے مشیر جیک سلیوان نے منگل کے روز غزہ میں بھوک کے راج پر کہا ' امریکہ اسرائیل کے ساتھ اس سلسلے میں مل کر کام کر رہا ہے کہ غزہ میں خوارک کی مقدار بڑھانے کی ضرورت ہے۔ یہ زمینی راستے کریم شالوم کے علاوہ ایک اور راستے سے بھی کوشش کی جارہی ہے۔'

تاہم اسرائیلی فوج سے جب اس بارے میں تبصرے کے لیے کہا گیا تو اسرائیلی فوج نے کوئی جواب نہیں دیا ہے۔ خیال رہے اس وقت مصر سے جڑی رفح راہداری اور اسرائیل کی کریم شالوم کے ذریعے زمینی راستوں سے انتہائی محدود امداد جنوبی غزہ پہنچ رہی ہے۔

اس انتہائی محدود خوراک اور امدادی سامان کے سبب اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انتونیو گوتریس نے پیر کے روز کہا تھا'غزہ میں فلسطینیوں کے لیے جان بچانے والا ریلیف کے سامان کی فراہمی میں بہت مشکلات پیش آرہی ہیں۔'

اقوام متحدہ کے ترجمان اسٹیفن دوجارک نے منگل کے روز اقوام متحدہ اور امدادی گروپ جاری اسرائیلی بمباری کے علاوہ بار بار سرحدی راستوں کے بند کیے جانے کے باوجود انتہائی ضروری امداد فراہمی کا کام کر رہے ہیں ۔'

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں