فلسطین اسرائیل تنازع

مغربی کنارے میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ، اردنی شہری قتل کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

اسرائیلی فوج نے رمضان المبارک کے دوران مغربی کنارے میں بھی اپنی کارروائیاں جاری رکھتے ہوئے فائرنگ سے ایک اردنی شہری کو قتل کر دیا ہے۔ اسرائیلی فوج نے اس کو مارنے کے بعد اس پر بھی عسکریت پسندوں کا حامی ہونے کا الزام لگایا ہے۔

فلسطینی وزارت صحت کے مطابق اسرائیلی فوج نے یکم رمضان کو اس توفیق عید فوازحسین نامی اردنی کو فائرنگ کا نشانہ بنایا تھا۔ تاہم وزارت نے اس کی ہلاکت کی اطلاع منگل کے روز دی ہے۔ اردنی شہری کی عمر 25 سال بتائی گئی ہے۔

وزارت خارجہ فلسطین کے مطابق توفیق عید فواز پر اسرائیلی فوج کی فائرنگ کا واقعہ مغربی کنارے کے شہر طولکرم میں پیش آیا اور اس شہر کی زیتا جنکشن پر گولی ماری گئی۔ یہ علاقہ طوکرم کے شمال میں واقع ہے۔

وزارت کے مطابق اس اردنی شہری کو اسرائیلی فوج نے ٹانگ پر گولی ماری تھی مگر اسے ڈیڑھ گھنٹے تک ہسپتال نہیں پہنچنے نہہیں دیا گیا۔ بلکہ اسے ہسپتال لے جانے والی ایمبولینس کو جان بوجھ کر روکے رکھا اور اس کا خون بہتا رہا ، جس کے نتیجے میں اس کی ہلاکت ہوئی گئی اور اسرائیلی فوجی اس دوران اردنی شہری کو تڑپتا دیکھتے رہے۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے 'اے ایف پی' نے اسرائیلی فوج سے اردن کے اس شہری کی ہلاکت کے بارے میں رابطہ کیا تو فوج کا جواب تھا ' رابطہ کیا گیا، ہمیں شبہ تھا کہ اس کا ہے کہ وہ ایک فلسطینی عسکریت پسند محمد جبار کے ساتھ رابطے میں تھا۔ اس لیے اسے پیر کے روز ہلاک کر دیا گیا۔'

فوج کے مطابق، فلسطینی شہری جبار مبینہ طور پر ہتھیار اور دھماکہ خیز ڈیوائس سے مسلح تھا اور اسرائیل میں خودکش حملہ کرنے کی تیاری کر رہا تھا

اردن کی شاہی حکومت کی طرف سے فوری طور پر کوئی تبصرہ نہیں کیا گیا ہے۔ واضح رہے اردن جو 1994 میں اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے پر دستخط کرنے والا دوسرا عرب ملک بن گیا تھا۔

ایک فلسطینی سیکیورٹی ذریعے نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ اردنی شہری فواز حسین اردن کے شہر رصفہ کا رہنے والا تھا۔ وہ طولکرم کے قریب نور شمس پناہ گزین کیمپ میں رشتہ داروں سے ملنے آیا تھا۔

واضح رہے غزہ میں اسرائیلی جنگ کے دوران اب تک مقبوضہ مغربی کنارے میں اسرائیلی فوج اور یہودی آباد کاروں نے کم از کم 427 فلسطینیوں کو قتل کیا ہے۔ زخیمیوں کی تعداد اس کے علاوہ ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں