سعودی مصورہ نے شاخ زیتون پینٹنگ میں امن کے معنی بیان کر کے پہلی پوزیشن حاصل کر لی

عرب ہلال احمر اور ریڈ کراس آرگنائزیشن کے جنرل سیکرٹریٹ کی طرف سے قطر میں ہونے والے "47ویں" اجلاس کے لیے جنرل اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر شروع کیے گئے "انسانیت کے فنکار" مقابلے میں نجلہ الغفیلی کی پینٹنگ نے پہلی پوزیشن حاصل کی۔

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

عرب ہلال احمر اور ریڈ کراس آرگنائزیشن کے جنرل سیکرٹریٹ کی طرف سے قطر میں ہونے والے "47ویں" اجلاس کے لیے جنرل اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر شروع کیے گئے "ہیومینٹی آرٹسٹ" مقابلے میں ایک سعودی مصورہ کی پینٹنگ نے پہلی پوزیشن حاصل کی۔ مصورہ نجلہ الغفیلی نے اپنی پینٹنگ میں تنازعات، جنگ، غربت اور اس کے نتیجے میں انسانی ہمدردی کو موضوع بنایا تھا۔

اس تاثراتی پینٹنگ میں، فنکارہ نے پائیدار امن کے لیے حل تلاش کرنے اور تشدد اور تنازعات کو جنم دینے والی کسی بھی نفرت کا مقابلہ کرنے کے لیے عالمی اپیل پیش کی، اور مسلح تصادم کے نتیجے میں غربت کے مصائب کو اجاگر کیا۔

تصویر میں خراب صحت میں مبتلا ایک بچے کو دکھایا گیا ہے، جو جنگوں اور مسلح تنازعات کی وجہ سے انتہائی غربت اور محرومی کا اشارہ ہے۔ اپنی تکلیف کے باوجود، وہ امن کی علامت کے طور پر زیتون کی ایک شاخ اٹھائے ہوئے ہے۔

نجلہ الغفیلی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے کہا کہ "اس نمائش میں میری شرکت، نسلی، مذہبی اور فرقہ وارانہ وابستگی سے ہٹ کر صرف بے گھر ، نقل مکانی کرنے والے، پناہ کی تلاش میں بھٹکتے، بھوک اور غربت جیسے واقعات کا سامنا کرنے والے لوگوں کے لیے انسانیت پر مبنی تھی۔ "

"ایک آرٹسٹ اپنے ساتھیوں کے لیے محبت اور امن پھیلانے کے لیے ایک شاندار پیغام دے سکتا ہے، خاص طور پر ان لوگوں کے لیے جو مشکل حالات سے دوچار ہیں۔"انہوں نے کہا

انہوں نے کہا کہ"میری پینٹنگز میں بعض اوقات ابہام اور گہرائی ہوتی ہے، جو اپنے اردگرد بہت سے سوالات اور استفسارات کو جنم دیتی ہے۔اس کس علاوہ میرے خیال میں آرٹ خوشی اور خوبصورتی ہے۔

سعودی عرب میں فنی تحریک کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس میں تیزی سے ترقی ہو رہی ہے اور بہت زیادہ ترقی ہو رہی ہے۔ اب ہر قسم کے فنون میں مرد اور خواتین فنکاروں کی ایک بڑی تعداد سامنے آرہی ہے۔ اسی طرج نمائشیں اور مقابلے ملک کی فنون میں دلچسپی کی نشاندہی کرتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ فنکار کو ’’مقصدیت ، ثابت قدمی، استقامت اور عزم کے ساتھ ساتھ چیلنج کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار رہنا چاہیے۔ کیونکہ کامیابی کی سیڑھی پر چڑھنا آسان نہیں ہے۔‘‘

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں