فلسطین اسرائیل تنازع

امریکہ اور اردن کا مشترکہ فضائی مشن ، غزہ میں امدادی سامان گرایا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکہ اور اردن کے سی 130 طیاروں نے ہفتے کے روز مشترکہ طور پرامدادی سامان گرایا ہے۔ غزہ میں قحط کی زد میں فلسطینی عوام کے لیے امریکہ نے اردن کے ساتھ مل کر یہ سرگرمیاں کرنے کا فیصلہ تقریباً تین ہفتے قبل کیا گیا تھا۔ رواں ماہ کے دوران اس سے قبل بھی یہ مشترکہ 'ائیر ڈارپنگ' کی جا چکی ہے۔

ہفتے کے روز کی گئی تازہ 'ائیر ڈراپنگ' کی امریکی سینٹ کام نے تصدیق کی اور اس سلسلے میں ایک بیان بھی جاری کیا ہے۔ بیان کے مطابق ایک امریکی سی 130 طیارے اور ایک ہی اردنی سی 130 طیارے نے اس مشن میں حصہ لیا ہے۔ اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ غزہ کی پٹی پر فلسطینی بچے بھوک سے ہلاک ہوئے ہیں۔ نیز غزہ ایک قحط کی زد میں ہے۔

امریکی 'سنیٹ کام 'کے بیان میں کہا گیا ہے کہ ہفتے کے روز گرایا جانے والا امدادی سامان ہماری ان مسلسل کوششوں کا حصہ ہیں جو امدادی سامان گرانے کے منصوبے کے تحت جاری ہیں۔

واضح رہے غزہ کا بڑا حصہ اسرائیلی بمباری میں تباہ کر دیا گیا ہے۔ 23 لاکھ کی آبادی بے گھر ہونے کے بعد خوارک کی بد ترین قلت کا سامنا ہے۔ اسرائیل نے غزہ میں امدادی سامان اور خوراک کی ترسیل کی راہ میں رکاوٹیں کھڑی کر رکھی ہیں۔ اس سبب قحط کے خطرے کی نشاندہی کے بعد امریکہ نے اردن کی طرح فضا سے خوراک گرانے کا فیصلہ کیا تھا۔ 2 مارچ کو امریکہ نے اس سلسلے میں پہلی بار 'ائیر ڈراپنگ' کی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں