بارودی سرنگ کے ساتھ ٹرک ٹکرانے سے ہلاک شامی شکاریوں کی تعداد 19 ہو گئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
3 منٹس read

شام کے جنگ زدہ علاقوں میں بچھائی گئی بارودی سرنگیں آج بھی شہریوں کے لیے سخت خطرے کا باعث ہیں ۔ جیسا کہ ایک تازہ واقعے میں زیر زمین دبائی گئی ایک بارودی سرنگ کے پھٹنے سے ٹرک پر سوار کم از کم اب تک 19 شامی شہری ہلاک ہوگئے ہیں۔ ابتدائی طور پر ہلاکتوں کی تعداد 16 رپورٹ کی گئی تھی۔ جو اب بڑھ کر 19 ہو گئی ہے۔

یہ تازہ واقعہ شام کے اس صحرائی علاقے میں پیش آیا ہے جو داعش کے کنٹرول میں رہا ہے اور داعش نے اس میں بارودی سرنگیں بچھا رکھی تھیں۔

بتایا گیا ہے کہ ماہ فروری سے اپریل کے درمیان شام کے باشندے روایتی طور ہر سال اپنے صحرائی علاقوں میں ' ٹرافلز ' کا شکار کرتے ہیں۔ بد قسمتی سے یہ صحرائی علاقے ایسے بھی ہیں جہاں داعش کی ہائیڈ آؤٹس پائی جاتی ہیں۔ انہی میں سے ایک بادیہ کا صحرا ہے۔

شکاریوں کا ایک قافلہ اس علاقے میں' ٹرافلز ' کی تلاش میں نکلا تھا کہ 'ٹرافلز' کی قیمتیں جنگ کے بعد کافی زیادہ ہوگئی ہیں۔ اس لیے مقامی شکاری انہیں شکار کر کے فروخت کرتے ہیں اور اپنی گزر بسر کر لیتے ہیں۔

ان میں کئی شکاری اپنے اہل خانہ کو بھی اپنے ساتھ شریک کرتے ہیں تاکہ شکار زیادہ اچھا ہو جائے اور زیادہ سے زیادہ دام وصول ہو سکیں ۔ اس واقعے میں بھی مردوں کے ساتھ ان کے اہل خانہ کی موجود ہونے کی اطلاع ہے۔ جن کا ٹرک بارودی سرنگ سے اچانک ٹکرا گیا اور ابتدائی طور پر 16 افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاع سامنےآئی۔ تاہم بعد ازاں یہ تعداد 19 ہو گئی ہے۔

بتایا گیا ہے کہ ان ہلاک ہونےوالوں میں کم از کم 9 کی تعداد میں خواتین بھی شامل ہے۔ جبکہ کئی افراد زخمی بھی ہوئے ہیں۔ شام کے بارے میں قائم ' آبزرویٹری ' کا کہنا ہے کہ راقہ کے علاقے میں اب بھی داعش کے اثرات موجود ہیں۔ یہ بارودی سرنگیں بھی داعش نے ہچھا رکھی تھیں۔ جو ابھی تک جا بجا موجود ہیں اور اچانک حادثات کا موجب بن رہی ہیں۔

حالیہ ہفتوں کے دوران بارودی سرنگوں کے پھٹنے کے کئی واقعات رپورٹ ہوئے ہیں ، جبکہ حکام نے اس سلسلے میں خطرے سے خبردار بھی کر رکھا ہے۔

رواں ماہ کے دوران اس سے پہلے داعش سے جڑے بندوق برداروں نے 18 افراد کو ہلاک کر دیا تھا۔ان میں زیادہ تر عام شری تھے۔ پچھلے ماہ اسی طرح کی بارودی سرنگ کے پھتنے سے 14 افراد ہلاک ہوئے تھے جو ' ٹرفلز ' کے شکار کے لیے راقہ کے صحرا میں نکلے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں