حزب اللہ کی سرحد پار اسرائیلی مقامات پر بمباری

لبنان میں صہیونی بمباری سے 306 افراد جاں بحق ہوچکے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

لبنانی حزب اللہ گروپ نے اعلان کیا ہے کہ اس نے غزہ کی پٹی میں فلسطینی عوام کی حمایت میں سرحد پر متعدد اسرائیلی مقامات کو نشانہ بنایا ہے اور عرب عالمی خبر رساں ایجنسی کے مطابق اسرائیلی فوجیوں کو براہ راست نشانہ بنایا گیا۔

حزب اللہ نے الگ الگ بیانات میں کہا کہ اس کے جنگجوؤں نے شبعا فارمز میں رویسۃ القرن اور زبدین کے مقامات کو میزائلوں سے نشانہ بنایا۔ انہوں نے مزید کہا ان کے ارکان نے تلۃ الطیحات اور بیاض بلیدہ کے مقام پر اسرائیلی فوجیوں کے ایک اجتماع کو توپ خانے کے گولوں سے نشانہ بنایا اور انہیں براہ راست نشانہ بنایا۔ دوسری جانب اسرائیلی فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ اس نے سرحد پار سے لبنان کی جانب سے اپنے بعض مقامات پر گولہ باری کی نگرانی کی اور فورسز نے گولہ باری کے ذرائع پر فائرنگ کر کے جواب دیا۔

اقوام متحدہ کے دفتر برائے رابطہ برائے انسانی امور نے بتایا ہے کہ لبنان میں 8 اکتوبر 2023 کو جنگ شروع ہونے کے بعد سے 7 مارچ تک 306 اموات کے ساتھ 820 افراد زخمی ہو چکے ہیں۔ مرنیوالوں میں 51 عام شہری شامل ہیں۔ ان شہریوں میں 22 خواتین، 8 بچے، 3 صحافی اور 7 ہیلتھ ورکرز شامل ہیں۔ 90859 افراد بے گھر ہوگئے ہیں۔ 18 پناہ گاہیں ہیں جہاں صرف 1,501 بے گھر افراد رہائش پذیر ہیں۔

اسرائیلی بمباری کے نتیجے میں متاثرہ زمین کا رقبہ 462 ہیکٹر تک پہنچ گیا اور تباہ ہونے والی پانی کی سہولیات کی تعداد 9 ہے اور اس سے ایک لاکھ افراد متاثر ہوئے ہیں۔ متاثرہ دیہات میں 72 سرکاری اور پرائیویٹ سکول جزوی یا مکمل طور پر بند کردیئے گئے۔ 72 فیصد کسانوں نے اپنا ذریعہ معاش گنوا دیا ہے۔ متاثرہ فارمز کی تعداد 300 تک پہنچ گئی ہے۔

قبل ازیں اسرائیلی جنگی طیاروں نے رامیح قصبے کے مضافات میں ایک مکان پر حملہ کیا جس سے املاک، فصلوں اور پڑوسی گھروں کو نقصان پہنچا۔ اسرائیلی جاسوس طیاروں نے رات بھر اور آج صبح تک طائر اور بنت جبیل اضلاع کے دیہاتوں پر پروازیں کیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں