دو ارب 20 کروڑ ڈالر مالیت کے امریکی ٹینک بحرین کو فروخت کرنے کی منظوری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

امریکہ نے منگل کے روز بحرین کے لیے ٹینکوں کی فروخت کے ایک معاہدے کی منظوری دے دی ہے۔ اس سلسلے میں امریکی دفتر خارجہ نے کانگریس کو فیصلے سے آگاہ کر دیا ہے کہ امریکہ بحرین کو ایم آئی اے 2 قسم کے 50 جدید ٹینک فروخت کرنے کو تیار ہے۔

یہ امریکی ٹینک زمینی جنگ کے لیے آزمودہ ہیں۔ خلیجی ملک بحرین کو ایران کی طرف سے کشیدہ تعلقات کا سامنا ہے۔ بتایا گیا ہے کہ ان ٹینکوں کی بحرین کو فروخت کے نتیجے میں درپیش موجوہ خطرات کے علاوہ مستقبل میں سامنے آنے والے خطرات کا مقابلہ بھی کر سکے گا۔

دفتر خارجہ کی طرف سے جاری کردہ بیان میں مزید کہا گیا ہے' ان ٹینکوں کی فراہمی کی صورت میں بحرین خطے میں امریکی آپریشنز کا حصہ بننے کے ساتھ ساتھ امریکہ کے دوسرے شراکت داروں کے ساتھ بھی آپریشنز میں حصہ لے سکے گا۔'

واضح رہے دفتر خارجہ کی اس منظوری کے بعد بھی اس ڈیل کے لیے حتمی منظوری ضروری ہو گی۔ اگر کانگریس چاہے تو فیصلے کو روک بھی سکتی ہے۔ تاہم عام طور پر اس طرح کے فوجی نوعیت کے فیصلوں کو کانگریس روکتی نہیں ہے۔ گذشتہ سال صدر جو بائیڈن نے بحرین کے ساتھ ایک نئے معاہدے پر دستخط کیے تھے تاکہ فوجی اور اقتصادی تعاون کو مزید فروغ دیا جا سکے۔

بحرین امریکہ نان نیٹو میجر اتحادی ہے اور امریکہ کے پانچویں بحری بیڑے کا میزبان ملک ہے۔ اس کی عرب ملکوں میں انفرادیت یہ بھی ہے کہ اس نے امریکہ کے ساتھ مل کر حوثیوں کے خلاف بنائے گئے اتحاد کے معاہدے پر بھی دستخط کیے ہیں۔

امریکہ اور برطانیہ نے حوثیوں کی طرف سے بحیرہ احمر میں میزائل حملوں کے بعد یمن میں ایرانی حمایت یافتہ حوثی مراکز کو بھی نشانہ بنایا ہے اور کئی بار فضائی حملے کیے ہیں۔

امریکی ساختہ ابرامز ٹینک دنیا کے بھاری ترین ٹینک مانے جاتے ہیں اور یہ امریکی فوج کے فلیٹ میں اہم ترین ٹینک ہیں۔ پچھلے سال صدر جو بائیڈن نے یوکرین کو بھی یہ ٹینک دینے کی منظوری دی تھی تاکہ روس کے خلاف لڑائی میں ان کا موثر استعمال کر سکے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں