اسرائیلی ڈرون کا غرب اردن کے شہر طولکرم میں مسلح افراد پر حملہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج نے جمعرات کو ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ اس نے مغربی کنارے کے شہر طولکرم میں نور شمس کیمپ میں ڈرون سے دو عسکریت پسندوں کو نشانہ بنایا ہے۔

فلسطینی ٹی وی کے مطابق بدھ کے روز نور شمس کیمپ کے ایک مقام پر اسرائیلی ڈرونز کی بمباری کے بعد یہ بیان سامنے آیا۔

ٹیلی ویژن نے اطلاع دی ہے کہ الجورا نامی محلے میں واقعے کیمپ میں اس جگہ پر ہلاکتیں ہوئی ہیں۔

فلسطینی خبر رساں ایجنسی نے اطلاع دی ہے کہ اسرائیلی فورسز نے آج رات کئی گاڑیوں کے ساتھ کیمپ پر دھاوا بول دیا اور اس کا سخت محاصرہ کر لیا۔ جبل النصر، جبل الصالحین اور اس کے مشرقی داخلی راستے کو بند کردیا گیا۔ اس کے آس پاس کے علاقے میں سنائپرز تعینات کیے اور کیمپ کو ایک بند فوجی زون قرار دے کر اس میں داخلے اور باہر نکلنے پر پابندی لگا دی"۔

قابض فورسز نے جبل الصالحین میں شہریوں کے گھروں پر دھاوا بولا ان کی تلاشی لی اور ان کے مکینوں سے پوچھ گچھ کی۔

فلسطینی خبر رساں ایجنسی کے مطابق اسرائیلی فوج نے مغربی اور جنوبی داخلی راستوں سے شہر میں بڑے پیمانے پر دراندازی کی اور ہر کے داخلی راستوں پر50 سے زیادہ گاڑیاں اور بھاری بلڈوزر مرکزی سڑکوں پر گھوم رہے تھے"۔

اس نے مزید کہا کہ اسرائیلی جاسوس ڈرون اور جنگی جہاز شہر اور اس کے کیمپوں پرواز کرتے رہے۔

القدس بریگیڈز کے تین ارکان ہلاک

دوسری جانب فلسطینی اسلامی جہاد کے عسکری ونگ القدس بریگیڈ نے بدھ کے روز ایک بیان میں کہا کہ جنین میں فوجی آپریشن کے کمانڈر سمیت اس کے تین ارکان اسرائیلی فضائی حملے میں ہلاکت ہوئے ہیں۔

قبل ازیں فلسطینی ٹیلی ویژن نے فلسطینی ہلال احمر کے حوالے سے اطلاع دی تھی کہ مغربی کنارے میں جنین میں ایک کار کو نشانہ بنانے والے اسرائیلی بمباری میں تین افراد ہلاک اور ایک زخمی ہوا ہے۔ اسرائیلی فوج نے بھی اس کا اعتراف کیا اور کہا ہے کہ فوج نے غرب اردن میں دہشت گرد عناصر کو نشانہ بنایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں