تحریک کے رہ نماؤں کی ہلاکت کا اعلان القسام بریگیڈز کی ذمہ داری ہے: حماس

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

اسرائیلی فوج کی جانب سے غزہ کی پٹی میں حماس کے متعدد رہ نماؤں کی ہلاکت کے اعلان کے بعد فلسطینی تحریک مزاحمت حماس کے رہ نما محمد نضال نے ’العربیہ‘ کو بتایا کہ تحریک کے رہ نماؤں کے قتل کا اعلان کرنا یا اس کی تردید کرنا القسام بریگیڈز کی ذمہ داری ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ "حماس کے رہ نماؤں کی ہلاکت کی تصدیق یا تردید کرنے میں القسام بریگیڈ اسرائیلی فوج کے مقابلے میں زیادہ معتبر ہوگی"۔

انہوں نے بتایا کہ اسرائیلی فوج کی طرف سے مارے جانے والوں کا اعلان اور ان کے نام ایسی شخصیات کے ہیں جو بے گھر اور عام شہریوں کی مدد کے لیے سول کام کرتے ہیں اور یہ فوجی شخصیات نہیں ہیں"۔

العربیہ/الحدث کے ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ اسرائیل نے غزہ میں حماس اور اسلامی جہاد کے ارکان کی بڑی تعداد کو گرفتار کیا اور قیدیوں کو رہا کر لیا ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ اسرائیل کی طرف سے غزہ کی پٹی کے مشہور الشفاء میڈیکل کمپلیکس پر دھاوے کے دوران اسلامی جہاد کے رہ نما خالد البطش کی گرفتاری میں کوئی صداقت نہیں ہے۔

اسرائیلی فوج نے کہا کہ تھا کہ اس نے 90 فلسطینیوں کو ہلاک کیا ہے اور سب سے مشہور کمپاؤنڈ میں 300 سے پوچھ گچھ کے ساتھ ساتھ 160 دیگر کو گرفتار کر کے تفتیش کے لیے اسرائیل منتقل کر دیا ہے۔

دریں اثناء اسرائیلی اخبار’یدیعوت احرونوت‘ نے اطلاع دی ہے کہ الشفا کمپلیکس آپریشن میں حراست میں لیے گئے افراد میں خالد البطش بھی شامل ہے۔

اسرائیلی فوج نے اعلان کیا ہے کہ اس نے غزہ کی پٹی کے جنوبی علاقے رفح میں ایک چھاپے میں چار افراد کو ہلاک کر دیا ہے جس کے بارے میں کہا گیا ہے کہ وہ حماس تحریک کے رہ نما تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں