جدہ ایئرپورٹ پر رمضان آپریشنز بخوبی جاری ہیں: وزیر ذرائع آمد و رفت

11 فروری سے 20 مارچ تک 5.4 ملین سے زیادہ مسافروں کی آمد اور روانگی ہوئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

سعودی عرب کے وزیرِ آمدورفت صالح بن ناصر الجاسر نے بدھ کے روز اس بات کو یقینی بنانے کے لیے جدہ کے شاہ عبدالعزیز بین الاقوامی ہوائی اڈے کا معائنہ کیا کہ رمضان المبارک کے لیے آپریشنز بآسانی جاری ہیں۔

الجاسر جو جنرل اتھارٹی آف سول ایوی ایشن کے چیئرمین بھی ہیں، نے کہا کہ اس کا مقصد "اعلیٰ درجے کی خدمات فراہم کرنا ہے جس سے مہمانوں کے آرام اور سہولت میں اضافہ ہو۔"

سعودی پریس ایجنسی نے ان کے حوالے سے بتایا کہ ہوائی اڈے پر 27 سے زائد حکومتی اور سکیورٹی ادارے کارروائیوں میں شامل ہیں۔

ماہ شعبان کے آغاز (11 فروری) سے لے کر 10 رمضان (20 مارچ) تک کے اے آئی اے نے 30,572 پروازوں میں 5.4 ملین سے زیادہ مسافروں کی آمد اور روانگی ریکارڈ کی۔ ہوائی اڈے کا مصروف ترین دن گذشتہ سال 21 شعبان (13 مارچ 2023) کو تھا جس میں 157,800 مسافروں کی آمد و روانگی شامل تھی۔

الجاسر کے ساتھ جی اے سی اے کے صدر عبدالعزیز الدوئیلج سمیت کئی حکام بھی موجود تھے جن میں سعودی عرب کے ہوائی اڈوں کی ترقی کی نگرانی کرنے والے المطارات ہولڈنگ کے محمد بن عبداللہ المغلوث، جدہ ایئر پورٹ کمپنی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کے چیئرمین رعد المدحیم اور جدہ ایئرپورٹ کے سی ای او مازن جوہر شامل ہیں۔

انہوں نے ٹرمینل 1، شمالی ٹرمینل اور حج ٹرمینل کمپلیکس کا دورہ کیا۔

سامان ہینڈلنگ کے علاقے کے جائزے کے ساتھ معائنہ شروع ہوا جس کے بعد ایئر کنڈیشنڈ لاؤنجز کا دورہ ہوا جو فی گھنٹہ 6,000 مسافروں کو جگہ فراہم کر سکتے ہیں۔

الجاسر پھر شمالی ٹرمینل کی طرف سامان کو چھانٹ کر الگ کرنے والے علاقے کا جائزہ لینے کے لیے روانہ ہو گئے جو 1,430 مربع میٹر پر محیط ہے اور جہاں 522 مسافروں کے لیے انتظار کی جگہ ہے۔

ٹرمینل 1 پر وزیر نے 24,000 مربع میٹر چھانٹنے والے علاقے، 1,800 مسافروں کے لیے فی گھنٹہ انتظار کرنے کی جگہ اور 83 بسوں کے لیے پارکنگ کی سہولیات کا معائنہ کیا۔ انہوں نے آپریشنز اینڈ کنٹرول مانیٹرنگ سینٹر، مسافروں کی خودکار نقل و حمل کی سہولت اور مختلف لاؤنجز کا بھی دورہ کیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں