فلسطینی نوجوان کو اسرائیل کے لیے جاسوسی کے الزام میں موت کےگھاٹ اتار دیا گیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

جنین میں فلسطینی دھڑوں نے جمعرات کی صبح سویرے مغربی کنارے میں اسرائیل کے لیے جاسوسی کے الزام میں ایک نوجوان فلسطینی کو "خطرناک ترین ایجنٹ" قرار دیتے ہوئے اسے موت کے گھاٹ اتار دیا۔ مقتول کو ہلاک کیے جانے سے قبل ہسپتال سے اٹھایا گیا اور کچھ دیر بعد اسے گولیاں مار کر ہلاک کردیا گیا۔

فلسطینی میڈیا کا کہنا ہے کہ ایجنٹ کےساتھ حال ہی میں اسرائیلی فوج کی بات چیت کے بعد جنین میں مزاحمتی دھڑوں سے وابستہ 3 نوجوانوں کو قتل کیا تھا۔

مغربی کنارے سے آنے والی رپورٹوں میں بتایا گیا کہ مقتول شخص مبینہ جاسوس کا بھائی تھا، جس نے جنین اسکوائر میں موجود تمام لوگوں کے سامنے اپنی بے گناہی کا اعلان کیا مگر اسے قتل کردیا گیا۔

جنین میں سوشل میڈیا صارفین کے مطابق جس نوجوان کو سزائے موت دی گئی اس کی شناخت "کرم الجبارین" کےنام سے کی گئی ہے جب کہ اس کے بھائی کا نام "کریم الجبارین" ہے۔

سوشل میڈیا پر وائرل ویڈ میں یہ بھی دکھایا گیا کہ کس طرح جنین میں ایجنٹ کو اس کے بھائی کے ذریعے ہلاک کیا گیا۔

ایک ویڈیو کلپ میں اس لمحے کو ریکارڈ کیا گیا جب جنن کے ایک متاثرین کی ماں نے اپنے بیٹے کو قتل کرنے والے ایجنٹ کی لاش کو دیکھا۔

7 اکتوبر 2023ء کو غزہ کی پٹی پر اسرائیلی جنگ شروع ہونے کے بعد سے مغربی کنارے میں اسرائیلی فوجی کارروائیوں میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے اور روزانہ کی بنیاد پر پورے مغربی کنارے میں چھاپوں اور گرفتاریوں کا عمل جاری ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں