فلسطین اسرائیل تنازع

مغربی کنارے میں کار پر بمباری، کار سوار تین فلسطینی شہید ایک زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

مقبوضہ مغربی کنارے میں اسرائیلی بمباری سے کار میں سوار تین فلسطینی شہید اور ایک زخمی ہوا ہے۔ یہ واقعہ بدھ کے روز مغربی کنارے کے شہر جنین میں پیش آیا ہے۔ فلسطینی وزارت صحت نے فلسطینیوں کی ہلاکت کی تصدیق کر دی ہے۔

اسرائیلی فوج کی طرف سے کہا گیا ہے کہ یہ آپریشن فلسطینی جنگجووں کو ٹارگٹ کر کے کیا گیا تھا۔ فوجی بیان کے مطابق ایک جنگی جہاز نے چار فلسطینی جنگجووں کو اس وقت بمباری کی زد میں لے لیے جب چار جنگجو جنین کے علاقے میں ایک کار پر سوار ہو کر جارہے تھے۔ ان میں سے دو اسلامی جہاد کے سینئیر رکن تھے۔ جنہوں نے اسرائیلیوں پر حملے کیے تھے۔

جنین کے پناہ گزین کیمپ کے رہائشی محمود غرائب اس واقعے کے عینی شاہد ہیں ان کا کہنا ہے کہ 'اسرائیلی جہاز نے کار کو شام 5 بجکر 37 منٹ پر بمباری کر کے نشانہ بنایا جب کار سوار افراد روزہ افطاری کے لیے جا رہے تھے۔ اس بمباری کے ہوتے ہی کار سواروں کے جسموں کے اعضاء ٹکڑے ہو کر اس پاس اڑتے ہوئے جا گرے۔ جبکہ کار جل کر خاکستر ہوگئی۔ حتیٰ کہ کار کی باڈی اور ڈھانچہ تک مکمل جل گیا ۔'

محمود غرائب نے اس بمباری کے دوران ہی ایک اور کار کے پاس سے گزرنے کے باوجود معجزانہ طور پر بچ جانے کو بھی دیکھا ۔ ان کے مطابق اس دوسری کار میں ایک میاں بیوی تھی ۔ مگروہ معجزانہ طور پر مکمل محفوظ رہے۔

غرائب نے اس سلسلے میں سی سی ٹی وی کی فوٹیج بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے ساتھ شئیر کی ہے۔ فوٹیج میں دیکھا جا سکتا ہے کہ ایک مصروف راستے پر چلتے ہوئے ایک کار کو اچانک آگ کے شعلوں نے اپنی لپیٹ میں لے لیا۔ مگر دوسری جانب سے آنے والی ایک اور کار مکمل طور پر محفوظ رہی۔ تاہم شام کے بعد آگ بھجانے والا عملہ موقع پر پہنچ گیا ۔ ان آگ بجھانے والوں نے دیکھا کہ کار کا فریم تک مکمل جل چکا تھا۔

واضح رہے کہ سات اکتوبر سے اب تک مقبوضہ کنارے میں کم از کم 358 فلسطینی ہلاک ہو چکے ہیں۔ مقبوضہ مغربی کنارے پر اسرائیل کا 1967 سے قبضہ چلا آرہا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں