اسرائیل ہوائی اڈے کے گرد نیوی گیشن سسٹم میں رخنہ ڈال رہا ہے: لبنان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

وزارتِ خارجہ نے جمعہ کو کہا کہ لبنان اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل میں اسرائیل کے خلاف شکایت درج کرائے گا۔ لبنان نے اسرائیل پر بیروت ہوائی اڈے کے ارد گرد نیوی گیشن سسٹم اور شہری ہوا بازی میں خلل پیدا کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔

اکتوبر میں غزہ کی جنگ شروع ہونے کے بعد سے لبنان کی ایرانی حمایت یافتہ حزب اللہ تحریک جو حماس کی اتحادی ہے، اسرائیلی فوج کے ساتھ روزانہ سرحد پار سے فائرنگ کا تبادلہ کر رہی ہے۔

وزارتِ خارجہ نے سرکاری خبری ایجنسی پر دیئے گئے ایک بیان میں کہا کہ لبنان غزہ جنگ کے آغاز سے بیروت ہوائی اڈے کے اردگرد کی فضاؤں میں نیوی گیشن سسٹم اور شہری ہوابازی کی حفاظت میں خلل پیدا کرنے پر اسرائیل کے خلاف "اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل میں فوری شکایت کرے گا۔"

وزارت کے بیان میں "اسرائیل کی فضائی اور زمینی نیوی گیشن سسٹم کو جام کرنے اور سگنلز وصول اور منتقل کرنے والے آلات کو دانستہ متأثر کرنے کی پالیسی کی مذمت کی گئی۔"

وزارت نے مبینہ رکاوٹ کی مزید تفصیلات فراہم نہیں کیں۔

سات جنوری کو بیروت کے ہوائی اڈے پر روانگی اور آمد کی اسکرینیں سائبر حملے کی زد میں آ گئیں جن پر میڈیا نشر کرنے والی فوٹیج کے بجائے حزب اللہ مخالف پیغامات دکھائے گئے اور سامان پہنچانے والی بیلٹس رک گئیں۔

ہوائی اڈے کو ہیک کرنے کے پسِ پردہ افراد کو تاحال بے نقاب نہیں کیا جاسکا ہے اور عوامی تعمیرات اور نقل و حمل کے وزیر علی حمیح نے لبنان میں سائبر سیکیورٹی کی مہارت کے فقدان کا اعتراف کیا۔

اے ایف پی کی ایک رپورٹ کے مطابق اکتوبر میں اسرائیل اور حماس کی جنگ کے بعد سے لبنان میں کم از کم 323 افراد جن میں زیادہ تر حزب اللہ کے مزاحمت کار تھے بلکہ 56 عام شہری بھی مارے جا چکے ہیں۔

اسرائیل میں سرحد پار سے ہونے والے تصادم میں کم از کم 10 فوجی اور سات شہری مارے گئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں