مشرقی لبنان پر اسرائیلی حملہ ، ایک شہری ہلاک ، چار زخمی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
4 منٹس read

اسرائیل کے اتوار کے روز بھی لبنان پر حملے جاری رہے۔ تازہ حملے میں ایک شامی ڈرائیور ہلاک ہو گیا ہے۔ یہ ڈرائیور لبنان کی ایک سپر مارکیٹ کے مالک کی گاڑی کا ڈرائیور تھا، جو اسرائیلی حملے میں زخمی ہوا مگر بعد ازاں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے ہلاک ہو گیا۔

بین الالقوامی خبر رساں ادارے ' اے ایف پی ' کے نمائندے کے مطابق اس تازہ ہلاکت سے قبل رات کے وقت ایک اور واقعے میں اسرائیل نے چار لبنانی زخمی کر دیے تھے۔ اسرائیل کی طرف سے یہ دونوں حملے لبنان کے مشرقی حصے میں شامی سرحد کے قریب کیے گئے ہیں۔

اسرائیل اور حزب اللہ کے درمیان 2006 کے بعد ایک بار پھر غیر معمولی کشیدگی کا ماحول پیدا ہوا ہے جو 8 اکتوبر 2023 سے جاری ہے۔ شروع میں اس کشیدگی کے واقعات سرحدوں کے قریب تک موجود تھے ۔ لیکن پچھلے کئی ماہ سے اسرائیل نے لبنان کی حدود کے اندر کی آبادیوں کے بیچ میں بھی حملے شروع کر رکھے ہیں۔

ایرانی حمایت یافتہ حزب اللہ کا کہنا ہے کہ اسرائیل کی غزہ میں جاری جنگ کے باعث حماس کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے اسرائیل کو نشانہ بنانے کی کوشش کر رہا ہے اور اس کی یہ کارروائیاں اس وقت تک جاری رہیں گی جب تک غزہ میں جنگ بندی نہیں کی جاتی ہے۔

غزہ میں اسرائیلی جنگ طویل تر ہوتے چلے جانے اور پچھلے ہفتوں سے لبنان کے اندر تک اسرائیلی فضائیہ اور فوج کی ہلاکت خیز کارروائیوں میں اضافے کے سبب حزب اللہ کے مضبوط مراکز پر حملوں سے خطرہ بڑھ رہا ہے کہ یہ جھڑپیں اور کارروائیاں مزید پھیل سکتی ہیں۔ جیسا کہ بیکا ویلی کے علاقے میں اسرائیل کے کئی حملے ہو چکے ہیں۔

لبنان کی سیکیورٹی سے متعلق ایک ذریعے نے اپنی شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے اتوار کے روز بیکا ہی کے علاقے سروائری میں اسرائیلی حملے کے نتیجے میں شامی ڈرائیور کی ہلاکت ہوئی ہے۔

' این این اے ' کے مطابق اس سے پہلے اتوار کے روز لبنان کے سرکاری خبر رساں ادارے ' این این اے ' نیشنل نیوز ایجنسی نے رپورٹ کیا تھا کہ گاڑی کا ڈرائیور حملے کے بعد کچھ ہی دیر میں ہلاک ہو گیا۔ یہ ڈرائیور اس گاڑی پر خوراک کی فراہمی کا کام کرتا تھا۔

بین الاقوامی خبر رساں ادارے ' اے ایف پی ' کے مطابق اتوار کے روز سے پہلی رات کو اسرائیل نے فضائی حملے سے حزب اللہ کے مرکز کو نشانہ بنایا تھا۔ نتیجتاً بلڈنگ کے قریب ہی موجود چار افراد زخمی ہو گئے۔ اس بارے میں اسرائیلی ائیر فورس کا کہنا ہے ' اس کے طیاروں نے دو منزلہ عمارت پر پانچ میزائل فائر کیے تھے۔ یہ میزائل بیکا کے مضافات کے علاوہ بیکا کی شہری آبادی کے اندر کے اہداف کے لیے فائر کیے گئے تھے۔'

اسرائیل کی فوج کے بیان میں کہا گیا ہے' جنگی طیاروں نے حزب اللہ کے ایک مینو فیکچرنگ کے مرکز کو نشانہ بنایا ہے جو بعلبک علاقے میں اسلحہ کی سپلائی کا ذمہ دار ہے۔

بعد ازاں حزب اللہ کے مطابق اس نے 60 کاتیوشا راکٹس فائر کر کے اسرائیل کی دو فوجی پوزیشنوں کو نشانہ بنانے کی کوشش کی ۔ یہ اسرائیلی ہدف گولان کی مقبوضہ پہاڑیوں میں تھے۔ اس بارے میں اسرائیل فوج کا کہنا ہے کہ اس نے ان 60 راکٹوں میں سے 50 راکٹوں کو لبنان کی طرف سے شمالی اسرائیل کی طرف آتے ہوئے شناخت کیا۔

بعد ازاں حزب اللہ کے فائر کیے گئے ان راکٹوں میں سے متعدد کو راستے میں ہی روک دیا جبکہ کئی راکٹ اسرائیل کے کھلے علاقے میں بغیر کوئی نقصان پہنچائے گر گئے۔

واضح رہے اسرائیل نے جن علاقوں کو نشانہ بنانے کی تازہ کوشش کی ہے یہ اسرائیل اور لبنان کی سرحد سے 100 کلو میٹر دور کے علاقے ہیں، اس کے نتیجے میں تقریباً دس دن قدرے امن سے گذرنے کا اختتام ہو گیا ہے۔ اب تک اسرائیلی حملوں کے نتیجے میں 324 لبنانی ہلاک ہو چکے ہیں۔ جبکہ اسرائیل کے دس فوجی اور سات عام لوگ ہلاک ہوئے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں